فوٹوبشکریہ فیس بک

مالی سال 2019 میں حکومت کا 9 ارب 69 کروڑ ڈالر قرض لینے کا امکان
07 ستمبر 2018 (16:05) 2018-09-07

اسلام آباد: مالی سال 2019 میں حکومت کا 9 ارب 69 کروڑ ڈالر قرض لینے کا امکان ہے۔ اقتصادی امور ڈویژن کے مطابق حکومت 3 ارب ڈالر کے یورو اور سکوک بانڈز جاری کر سکتی ہے جبکہ کمرشل بینکوں سے 2 ارب ڈالر کا قرض بھی لیا جا سکتا ہے۔ پڑوسی ملک چین سے 84 کروڑ ڈالر لیے جانے کا بھی امکان ہے۔

حکومت کو ایشیائی ترقیاتی بینک 1 ارب 38 کروڑ ڈالر ، اسلامک ڈیولپمنٹ بینک 1 ارب ڈالر اور ورلڈ بینک 70 کروڑ ڈالر قرض فراہم کر سکتا ہے۔ واضح رہے کہ حکومت نے جولائی 2018 میں لگ بھگ 47 کروڑ ڈالر قرض لیا تھا۔

گزشتہ ماہ 28 اگست کو اسٹیٹ بینک آف پاکستان نے مالی سال 18-2017 کے اختتام پر حکومت کے قرض اور واجبات کی تفصیلات جاری کیں جن کے مطابق حکومت کے قرض اور واجبات کا حجم 29 ہزار 861 ارب روپے تک پہنچ گیا ہے۔

اسٹیٹ بینک کے مطابق ایک سال کے دوران حکومتی قرض اور واجبات میں 18.90 فیصد اضافہ ہوا۔ حکومت کے ذمے قرض اور واجب الادا رقم مجموعی قومی پیداوار (جی ڈی پی) کا تقریباً 87 فیصد ہے۔

مرکزی بینک کے اعداد و شمار کے مطابق حکومت کا مقامی قرض 16 ہزار 415 ارب روپے ہے جبکہ حکومتی اداروں کا قرض 1068 ارب روپے رہا۔ اسٹیٹ بینک کے مطابق حکومت کا بیرونی قرض 10 ہزار 935 ارب روپے رہا۔

مرکزی بینک کے مطابق پاکستان پر 1442 ارب روپے کے واجبات ہیں اور گزشتہ مالی سال کے دوران قرضوں اور واجبات پر تقریباً 475 ارب روپے سود ادا کیا گیا۔

 

 

 

 

 

 


ای پیپر