عمران خان کے اعلان نے وزراءکو نئی مشکل میں ڈال دیا
07 نومبر 2018 (20:53) 2018-11-07

اسلام آباد: وزیرِ اعظم عمران خان نے کہاہے کہ حکومت احتساب سے خائف عناصر کے شورو غل سے قطع نظر عوام سے کیے گئے اپنے وعدے کو پایہ تکمیل تک پہنچانے کے لئے پرعزم ہے ، ملک میں حکومتی وزرا کی کارکردگی کا جائزہ لینے کی روایت نہیں لیکن پی ٹی آئی حکومت ماضی کی روایت ختم کرکے اس نئی روایت کی بنیاد رکھے گی.

حکومتی وزرا اپنی کارکردگی کے حوالے سے جواب دہ ہیں اور کی کارکردگی کا باقاعدگی سے جائزہ لیا جائے گا، ا من و امان کا قیام اور قانون کی حکمرانی حکومت کی اولین ترجیح ہے،پی ٹی آئی نے نہایت مشکل مالی حالات میں حکومتی باگ ڈور سنبھالی ہے، عوام کو مشکلات سے ممکنہ حد تک ریلیف فراہم کرنے کے لئے ہماری اولین ترجیح تھی کہ دوست ملکوں کی مدد سے اس وقت ملکی معیشت کو سہارا دیا جائے ، حکومت برآمدات کو بڑھانے کی غرض سے ایکسپورٹ انڈسٹری کو مطلوبہ سہولیات فراہم کرنے پر بھی کام کر رہی ہے،اس وقت ملک مشکل صورتحال سے گزررہا ہے لیکن انشا اللہ آئندہ چھ ماہ میں واضح بہتری دیکھنے میںآئے گی۔

وزیرِ اعظم آفس میں صوابی، مردان، چارسدہ، نوشہرہ اور پشاور سے تعلق رکھنے والے اراکینِ اسمبلی نے ملاقات کی اسپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر، وزیرِ دفاع پرویز خٹک، وزیر مملکت علی محمد خان اور معاون خصوصی نعیم الحق ملاقات میں موجود تھے ،اراکین اسمبلی نے وزیرِ اعظم کو اپنے حلقوں سے متعلقہ مسائل سے آگاہ کیا۔ خیبر پختونخواہ کی مجموعی صورتحال اور ترقیاتی منصوبوں کے حوالے سے بھی بات چیت کی ،وزیرِ اعظم نے ممبران قومی اسمبلی کو انکے متعلقہ حلقوں کے مسائل ترجیحی بنیادوں پر حل کرانے کی یقین دہانیاں کراتے ہوئے کہاکہ ا من و امان کا قیام اور قانون کی حکمرانی حکومت کی اولین ترجیح ہے۔

ا نہوں نے کہاکہ پی ٹی آئی نے نہایت مشکل مالی حالات میں حکومتی باگ ڈور سنبھالی ہے، ہماری اولین ترجیح تھی کہ دوست ملکوں کی مدد سے اس وقت ملکی معیشت کو سہارا دیا جائے تاکہ عوام کو مشکلات سے ممکنہ حد تک ریلیف فراہم کیا جا سکے، حکومت برآمدات کو بڑھانے کی غرض سے ایکسپورٹ انڈسٹری کو مطلوبہ سہولیات فراہم کرنے پر بھی کام کر رہی ہے، اس کے ساتھ ساتھ شہریوں کے لئے صحت ، تعلیم و دیگر سہولتوں کی فراہمی کے لئے بھی کوششیں جاری ہیں ۔انہوں نے کہاکہ حکومت کے پچاس لاکھ گھروں کے منصوبوں سے جہاں لوگوں کو گھروں کی سہولت میسر آئے گی وہاں معیشت کا پہیہ بھی چلے گا اور نوجوانوں کو روزگار کے مواقع میسر آئیں گے۔

مختلف شہروں میں ناداروں اور بے آسرا لوگوں کو عارضی شیلٹر اور دو وقت کھانے کی سہولت فراہم کرنے پر بھی کام جاری ہے۔ وزیراعظم نے کہاکہ جن اراکین اسمبلی کے حلقوں میں بے نظیر انکم سپورٹ پروگرام کی طرف سے سروے نہیں کیا گیا وہ اس سلسلے میں حکومت کو آگاہ کریں تاکہ ترجیحی بنیادوں پر ان علاقوں میں غربت کا سروے کیا جا سکے۔ اس وقت ملک مشکل صورتحال سے گزررہا ہے لیکن انشا اللہ آئندہ چھ ماہ میں واضح بہتری دیکھنے میںآئے گی۔ اس ملک میں بے پناہ پوٹینشل ہے ۔ ملک میں دس کروڑ کی آبادی 35 سال سے کم عمر ہے جو اس ملک کی تقدیر بدلنے کی صلاحیت رکھتی ہے۔

انہوںنے کہاکہ پی ٹی آئی حکومت اپنے منشور کو عملی جامہ پہنانے کے سلسلے میں پرعزم ہے۔ حکومتی وزرا اپنی کارکردگی کے حوالے سے جواب دہ ہیں، حکومتی وزرا کی کارکردگی کا باقاعدگی سے جائزہ لیا جائے گا، ، حکومتی وزرا کی کارکردگی کا جائزہ لینے کی روایت اس ملک میں نہیں ہے لیکن پی ٹی آئی حکومت اس روایت کی بنیاد رکھے گی، احتساب سے خائف عناصر کے شورو غل سے قطع نظر حکومت عوام سے کیے گئے اپنے وعدے کو پایہ تکمیل تک پہنچانے کے لئے پرعزم ہے۔


ای پیپر