فوٹوبشکریہ فیس بک

بینکوں کا ڈیٹا چوری نہیں ہوا اور نہ ہی کوئی شواہد ملے: اسٹیٹ بینک
07 نومبر 2018 (12:17) 2018-11-07

کراچی: بینکوں کا ڈیٹا چوری نہیں ہوا، اسٹیٹ بینک نے ایف آئی اے حکام کے دعوے کی تردید کر دی۔

اسٹیٹ بینک نے ڈیٹا چوری کے حوالے سے تمام رپورٹس مسترد کردیں۔ ترجمان اسٹیٹ بینک کے مطابق 27 اکتوبر کو پاکستان کے صرف ایک بینک کی سیکیورٹی کا حصار توڑا گیا جبکہ چند بینکوں نے حفاظتی اقدام کے طور پر غیر ملکی پیمنٹ اسکیم سے رابطہ منقطع کیا۔ آئی ٹی سیکیورٹی سے متعلق اطمینان ہونے کے بعد غیر ملکی ادائیگی بھی بحال ہو جائے گی۔

دوسری جانب بینکاری صنعت سے وابستہ سائبر سیکیورٹی کے ماہر نے نیو نیوز سے بات کرتے ہوئے بتایا کہ ایف آئی اے کے پاس کوئی ٹیکنالوجی نہیں جو ڈیٹا چوری کا پتہ چلائے۔

واضح رہے کہ ایف آئی اے کے ڈائریکٹر سائبر کرائمز ونگ کیپٹن ریٹائرڈ شعیب نے دعوی کیا تھا کہ پاکستان کی تاریخ کا یہ سب سے بڑا سائبر حملہ تھا جس میں پاکستان کے تقریباً تمام بینکوں کا ڈیٹا بیرون ملک سے ہیک کرلیا گیا۔ کہتے ہیں بینکوں کو خط لکھ دیا ہے اور اس حوالے سے نمائندہ اجلاس بھی بلایا جارہا ہے۔

انہوں نے مزید کہا تھا کہ بھیس بدل کر شہریوں سے اکاؤنٹس کی معلومات لینے والا گروہ بھی پکڑا گیا۔ اب تک 100 سے زائد مقدمات درج ہوچکے ہیں اور گرفتاریاں بھی جاری ہیں۔

 

 


ای پیپر