Indian Farmers Union, new formula, protest, PM Modi, BJP government
07 مارچ 2021 (13:09) 2021-03-07

نیو دہلی: بھارتیہ کسان یونین نے احتجاج جاری رکھنے کیلئے کسانوں سے اپیل کی ہے کہ فی گاؤں دس روز کے لیے ایک ٹریکٹر اور پندرہ افراد کی فراہمی کا فارمولا اختیار کیا جائے ۔

اس فارمولے کے تحت ہر گاؤں سے پندرہ افراد کو دس روز کیلئے دھرنے کے مقام پر قیام کرنا ہوگا اور آئندہ دس روز کیلئے مزید پندرہ افراد ان کے متبادل ہونگے ۔ اس حکمت عملی سے کسانوں کو طویل عرصہ تک اپنا احتجاج جاری رکھنے میں مدد ملے گی ۔

خیال رہے کہ بھارتی کسان گزشتہ سال نومبر سے متنازعہ زرعی قوانین کے خلاف احتجاج کر رہے ہیں ۔ موسم کی سختی ، ٹریفک حادثات اور خودکشی کے سبب 248 کسان ہلاک ہوچکے ہیں ۔

اس سے قبل بھارت میں متنازع زرعی قانون کے خلاف 100 دن مکمل ہونے پر کسانوں نے ایکسپریس وے پر احتجاج کا اعلان کیا تھا ۔

کسانوں کی جانب سے مارچ کو دہلی سے باہر مختلف مقامات کو جوڑنے والے ایکسپریس وے پر 5 گھنٹوں کے لیے بلاک کرنے کا اعلان کیا گیا تھا ۔

اس موقع پر بھارتی کسانوں کا کہنا تھا کہ مودی کی ہٹ دھرمی کی وجہ سے گھر بار چھوڑ کر یہاں بیٹھنے پر مجبور ہیں ، حکومت کو کالے قوانین واپس لینے ہوں گے ۔


ای پیپر