ریاست مدینہ میں جمعے کی چھٹی کیوں نہیں؟
07 جنوری 2021 2021-01-07

 اللہ سبحانہ وتعالیٰ ہماری قوم کی کوتاہیوں کو معاف فرمائے اور حکمران کو صراط مستقیم پہ چلنے کی توفیق عطا فرمائے ، ریاست مدینے کے نام پہ کروڑوں مسلمانوں پہ حکم کرنے والے اور کچھ نہیں تو کم ازکم اس مبارک نام کی لاج رکھنے کے لیے دینی مساجد، مدرسوں کے منتظمین اور دینی جماعتوں کے سربراہوں کے بار بار مطالبے پر ہی اپنی مرضی پہ نہ سہی، ان کو اپنا ہم نوابنانے کی خاطر مملکت اسلامیہ پاکستان میں اتوار کی چھٹی کے بجائے جمعے کی چھٹی کا اعلان کردیتے۔ 

اللہ ذوالفقارعلی بھٹو مرحوم کی لحد پہ شبنم افشانی کرے، انہوں نے پہلی دفعہ اپنے ہم وطنوں کی اور شاید اپنے دل کی آواز سنی، اور پاکستان میں جمعے کی چھٹی کا اعلان کرکے لوگوں کے دلوں میں ٹھنڈ ڈال دی تھی، قارئین آپ کو ایک بات بتاﺅں، کہ ہمارے پاکستان میں ابھی تک اللہ تعالیٰ کا کرم ہے کہ میاں محمد نواز شریف کے ہردفعہ جانے کی ایک مردمومن نے نشاندہی کردی تھی اور اسی شخصیت نے اب موجودہ حکومت کے جانے کی بھی آواز دے دی تھی، اور ایسا اعلان کرنے والوں کی تعداد ایک سے زیادہ ہے۔ 

قارئین، میں آپ لوگوں کو زیادہ دیر تک ذہنی الجھن میں مبتلا نہیں کرنا چاہتا ، ایک دفعہ جب نواز شریف نے پیپلزپارٹی کی طرف سے اتوارکے بجائے جمعے کی چھٹی جس دن بند کرنے کا اعلان کیا تو مردمومن نے کہا تھا، کہ اللہ تعالیٰ رحم کرے، اب یہ حکومت زیادہ دیرتک نہیں چل سکتی۔ اور اب یہ جانے ہی والی ہے اور حکومت واقعی کچھ عرصہ بعد چلی گئی ۔ دوسری دفعہ میاں محمد نواز شریف کی حکومت میں جب مجاہد ختم نبوت ممتاز قادری اللہ سبحانہ وتعالیٰ انہیں کروٹ کروٹ جنت نصیب فرمائے، انہیں پھانسی پہ لٹکا دیا گیا تھا، حالانکہ اس کے اور بھی کئی مناسب طریقے تھے، مثلاً انہیں سزائے موت کے بجائے عمر قید کی بھی سزادی جاسکتی تھی جن کے ایما پر اتنی بڑی سزا دی گئی کیا اس ملک میں قوم کی معصوم بیٹی ڈاکٹر عافیہ صدیقی جس نے کسی امریکی کوقتل نہیں کیا تھا محض ہتھیار اٹھانے کی سزا، اورجرم پر عمر قید سے بھی زیادہ کی سزا سنائی ہوئی ہے مگر ہم نے امریکہ کو خوش کرنے کی خاطر اپنی دھرتی کے لعل قربان کردیا مگر عافیہ کیلئے ابھی تک کسی پاکستانی حکمران نے حجاج بن یوسف والا کردار ادا نہیں کیا حجاج تو مظلوم لڑکی کو بچانے پاکستان آگیا تھا ۔ایک دفعہ تب بھی وہ مردمومن اعلان کرتا رہا جب ن لیگ نے سود کے حق میں سپریم کورٹ جانے کا اعلان کیا تھا، کہ سود کے حق میں بیان دینا، اللہ سبحانہ وتعالیٰ کے ساتھ براہ راست اعلان جنگ ہے، اور اللہ تعالیٰ کیسے چاہتا اور برداشت کرتا کہ اس کی مخلوق اس کے خلاف جنگ کرنے کی غلطی کرے۔ 

ممتاز قادری صاحب کا جنازہ جس میں لاکھوں لوگ شریک تھے اس کا ریکارڈ ابھی تک قائم ہے، اگر انسان میں عقل سلیم ہو، توحکمرانوں کو یہ جان جانا چاہیے کہ محمد مصطفیٰ کے نام پہ کروڑوں مومن اپنی جان ہتھیلیوں پہ رکھ کر بطور نذرانہ حضور پرنور کی خدمت میں پہنچانے کے لیے ہمہ وقت تیار رہے ہیں، کیا پچھلے دنوں خادم ختم نبوت خادم حسین رضوی کا جنازہ حکمرانوں کے لیے چشم کشا نہیں؟ اور اس حقیقت کا غماز ہیں ، کہ وہ بانی ریاست مدینہ محمد مصطفیٰ کے غلامان وعاشقان کا یہ مقام ہے تو محبوب خدا کے چودہ سوسال سے شیخ عبدالقادر جیلانیؒ، عثمان علی ہجویریؒ سے لے کر ان پر درود وسلام کے روزانہ ہدیہ بھیجنے والوں کا کیا مقام ہوگا، کیونکہ درودشریف تو واحد ایسی عبادت ہے کہ جو ہرصورت قبول ہونی ہی ہوتی ہے، چاہے درود پڑھنے والا بے وضو ہی کیوں نہ ہو۔ اور جمعے والے دن تو حضور خود درود شریف وصول کرتے ہیں۔ قارئین احادیث شریف میں فضیلت جمعہ میں آپ کو سناتا ہوں، جمعے کے دن جو شخص غسل کرتا ہے، سر میں تیل ڈالتا ہے، خوشبو لگاتا ہے نماز کو جاتا ہے، اور جتنی نماز اللہ تعالیٰ نے مقدر کردی ہے اتنی پڑھتا ہے، خطبہ خاموش ہوکر سنتا ہے، مسلمانوں میں تفریق نہیں ڈالتا تو اللہ تعالیٰ اس بندے کے ایک جمعے سے دوسرے جمعے تک تمام گناہ معاف فرما دیتا ہے، سب دنوں سے افضل جمعے کا دن ہے، اسی دن حضرت آدم علیہ السلام پیدا ہوئے اسی دن ان کا انتقال ہوا،تم اس دن محمدپرکثرت سے درود پڑھا کرو تمہارا درود مجھے پیش کیا جاتا ہے، کسی نے عرض کیا کہ فوت ہونے کے بعد تو آپ مٹی ہوجائیں گے پھر درود کیسے آپ کو پیش ہوگا۔ ارشاد فرمایا ، اللہ تعالیٰ نے انبیاءکے جسم کو زمین پر حرام کردیا ہے۔ جمعے کے دن کی حاضری میں جو ترتیب ہوگی، وہی ترتیب اللہ تعالیٰ کے پاس بیٹھنے کی ہوگی، جوجمعے کی نماز میں پہلے مسجد میں آیا، وہ قیامت کے دن اللہ تعالیٰ کے بالکل قریب ہوگا، دوسرا دوسرے نمبر پر تیسرا تیسرے نمبر پر ہوگا، اور چوتھے نمبر والا بھی اللہ سے کچھ زیادہ دور نہ ہوگا، (حدیث ابن ماجہ) 

مطلب یہ ہے کہ جمعے کی نماز میں جلدی جانا، اللہ تعالیٰ کے قرب کی علامت ہے، جوشخص جمعے کے دن سورة کہف پڑھے گا، اس کے لیے دوجمعوں کے مابین ایک نورچمکتا رہے گا (حدیث نسائی) حدیث ابن مرودیہ) جمعے کے دن ایک ساعت ہے جو دعا اس ساعت میں کی جاتی ہے وہ قبول کرلی جاتی ہے حدیث (اصحاب السنن) جمعے کے دن کا اور تو اور غسل کرنا بھی باعث ثواب ونجات بن جاتا ہے۔ (حدیث طبرانی) میں جمعے کے بارے میں لکھا گیا ہے کہ جمعے کے دن کا غسل انسان کے گناہوں کو ہربال کی جڑسے کھینچ نکالتا ہے۔ 

یزید ابن مریم فرماتے ہیں، میں جمعے کی نماز کو جارہا تھا کہ مجھے راستے میں عبایہ مل گئے، انہوں نے مجھ سے دریافت کیا، کہاں جارہے ہو، میں نے کہا کہ جمعے کی نمازپڑھنے کے لیے جارہا ہوں انہوں نے فرمایا کہ مبارک ہو تمہارا اللہ تعالیٰ کی راہ میں چلنا، رسول پاک نے فرمایا کہ جس شخص کے پاﺅں اللہ تعالیٰ کی راہ میں گردآلود ہوئے اس پر آگ حرام ہے (حدیث ترمذی) 

قارئین ، یہ تمہیدطو لانی لکھنے کا مقصد صرف آپ کو یہ جتانا ہے کہ آخر ہم نے کافروں اور انگریزوں سے جان وتن کی جنگ کرکے اپنا مال عصمتیں اور انا اور غیرتوں کی قربانی دے کر اپنا الگ وطن کیوں بنایا تھا، اس لیے کہ کلمے کے نام پہ بننے والے ملک میں جمعے کے مبارک دن کی بجائے اتوار کی چھٹی کردی جائے گی؟ آپ کو ایک واقعہ سناتا ہوں، تبلیغی جماعت کے نیک نام جنرل جاوید ناصر کو ایک دن میں نے جمعے کیلئے جامع مسجد میں جاتے ہوئے نہیں دیکھا کہ وہ اپنی کالونی کی چھوٹی مسجد جہاں جمعہ نہیں ہوتا اکیلے بیٹھے ہیں، مجھے شک گزرا کہ جنرل صاحب کو یادنہیں رہا کہ آج جمعہ ہے میں فوراً مسجد میں گیا، اور پوچھا کہ جنرل صاحب آپ کو یاد نہیں کہ آج جمعہ ہے؟ جنرل ناصر ماشاءاللہ وہ نیک شخص ہیں جو ایک دن میں نجانے کتنے عرصے سے ختم قرآن کرلیتے ہیں فرمایا میرانی صاحب، آپ نے ٹھیک کہا اور فوراً نماز جمعے کے لیے چلے گئے قارئین ، کاش کہ حکمرانوں کو جمعے کی فضیلت کا پتہ ہوتا جو کہتے ہیں کہ دنیا میں اتوار کو چھٹی ہوتی ہے اگر تین دن چھٹی ہوگئی، تو پاکستان ترقی میں پیچھے رہ جائے گا، جبکہ زمینی حقائق یہ ہیں کہ بنگلہ دیش، انڈونیشیا، افغانستان، خلیجی ریاستیں، سعودی عرب کویت وغیرہ میں جمعے والے دن چھٹی ہوتی ہے، حدتو یہ ہے کہ بنگلہ دیش اور افغانستان بھی ترقی (GDP) میں ہم سے کہیں آگے ہیں، خداحکمرانوں کو عقل دے، ابھی بھی وقت ہے۔ 


ای پیپر