افغانستان میں امریکہ کیخلاف بغاوت شروع ،امریکی سفیر ٹرمپ کیخلاف کھڑے ہوگئے
07 جنوری 2020 (16:33) 2020-01-07

کابل: افغانستان میں امریکی سفیر جان باس نے استعفیٰ دے دیا، وہ کابل میں 2سال سفارتی خدمات سر انجام دیتے رہے ہیں،جان باس نے ٹوئٹر پر لکھا کہ اب وقت آگیا ہے کہ میں افغانستان سے چلا جاﺅں،افغان قبائل اختلافات بھلا کر طالبان کے ساتھ تصفیہ کرتے ہوئے مل کر کام کریں، میری رخصتی کسی تنازعہ کا نتیجہ نہیں بلکہ طویل المدتی منصوبہ بندی ہے۔

بین الاقوامی خبر رساں ادارے کے مطابق افغانستان میں امریکی سفیر جان باس نے کہا ہءکہ وہ کابل میں دو سال کی سفارتی خدمات کے بعد اپنا عہدہ چھوڑ رہے ہیں۔امریکی سفیر جان باس نے ٹویٹر پر لکھا کہ اب وقت آگیا ہے کہ میں افغانستان سے چلا جاﺅں۔

سبکدوش ہونے والے سفیر نے امید ظاہر کی ہے کہ افغانستان کے شہری اور رہنما اتحاد کو مضبوط کرتے ہوئے اپنے اختلافات کو ایک طرف رکھیں گے اور طالبان کے ساتھ سیاسی تصفیہ کرنے کے لئے مل کر کام کریں گے۔امریکی محکمہ خارجہ کے ایک عہدیدار نے اپنا نام ظاہر نہ کرنے کی شرائط پر نیویارک ٹائمز کو بتایا کہ امریکی ملازمین کے لئے ملازمت میں تناﺅ کے سبب حالات خراب ہیں اور ایسے میں دو سال کام کرنا معمولی نہیں ہے۔

عہدیدار نے مزید کہا کہ باس کی رخصتی طویل منصوبہ بند تھی اور یہ کسی تنازعہ کا نتیجہ نہیں ہے۔واضح رہے کہ ان کی رخصتی واشنگٹن کی طرف سے طالبان تحریک کے ساتھ امن معاہدے پر متفق ہونے کی کوششوں کے بعد سامنے آئی ہے ۔


ای پیپر