خورشید شاہ کے 500ارب سے زائد اثاثوں کا انکشاف
07 اگست 2019 (19:48) 2019-08-07

کراچی:آصف علی زرداری کے بعد پیپلزپارٹی کی اہم ترین شخصیت خورشید شاہ بھی نیب کے نشانے پر آگئے ،500ارب سے زائد اثاثوں کا انکشاف ہو گیا ۔

تفصیلات کے مطابق قومی احتساب بیورو(نیب)نے پیپلزپارٹی کے رہنماخورشید شاہ کے خلاف انتہائی اہم شواہد حاصل کرلیے۔ جس میں خورشید شاہ کے پانچ سو ارب سے زائد اثاثوں کاانکشاف ہوا ہے۔نیب نے خورشیدشاہ کے اکاﺅنٹس، بے نامی جائیدادوں ، بدعنوانی سے بنائے گئے اثاثوں اور فرنٹ مین کی تفصیلات بھی حاصل کرلی ہیں۔ذرائع نے بتایاکہ خورشید شاہ اور اہلخانہ کے کراچی، سکھر اور دیگر علاقوں میں 105بینک اکاﺅنٹس ہیں ۔

دستاویز کے مطابق جائیدادیں سکھر، روہڑی، کراچی اور دیگر علاقوں میں بنا ئی گئی ہیں، پہلاج رائے گلیمر بینگلو، جونیجو فلور مل، مکیش فلور مل اور دیگر جائیدادیں بنائیں، مبینہ فرنٹ مین پہلاج نے2015 سے قبل کوئی ٹیکس ادا نہیں کیا۔نیب دستاویز میں بتایا گیا خورشید شاہ کامبینہ فرنٹ پہلاج معمولی دکان چلاتا تھا ، فرنٹ مین لڈومل کے نام پر11 اور آفتاب حسین سومرو کے نام پر 10 جائیدادیں ہیں۔

دستاویز کے مطابق خورشید شاہ نے اعجازپل کے نام پرسکھر اور روہڑی میں 2 جائیدادیں بنائیں ، مبینہ فرنٹ مین کے لیے کارڈیو اسپتال سے متصل ڈیڑھ ایکڑ نرسری الاٹ کرائی۔

نیب ذرائع کے مطابق خورشید شاہ کی بے نامی جائیدادوں میں عمر جان نامی شخص کا بھی اہم کردار ہے، پی پی رہنما کی زیر استعمال بم پروف گاڑی عمرجان کے نام پررجسٹرڈہے جبکہ اسلام آباد میں خورشید شاہ کا زیر استعمال گھر بھی عمر جان کے نام پر ہے جبکہ سکھر اور دیگر علاقوں میں ترقیاتی منصوبے عمر جان کی کمپنی کو دلوائے گئے۔


ای پیپر