عمرا خان بنی گالہ کیس کو دیکھیں اور مثال قائم کریں : چیف جسٹس
07 اگست 2018 (14:49) 2018-08-07

اسلام آباد:سپریم کورٹ نے بنی گالہ اراضی کیس میں حد بندی اورریکارڈ درست کرنے کیلئے سروئیرجنرل کو 6ہفتے کی مہلت دے دی۔ چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے کہ عمران خان وزیراعظم بننے جارہے ہیں وہ خود اس معاملے کودیکھیں ، مثال قائم کریں گے تولوگ بھی ان کوفالوکریں گے۔

چیف جسٹس میاں ثاقب نثار کی سربراہی میں سپریم کورٹ کے 3رکنی بینچ نے بنی گالہ تجاوزات سے متعلق کیس کی سماعت کی ، سرویئرجنرل آف پاکستان اور ممبر ریونیو بورڈ عدالت میں پیش ہوئے۔ چیف جسٹس نے سرویئرجنرل آف پاکستان کی کارکردگی کو غیرتسلی بخش قراردیا اورکہا کہ عدالتی حکم کوسنجیدگی سے کیوں نہیں لیا گیا عدالتوں میں کاغذات دیکھنے اورچائے پینے نہیں آتے ،سرویئر جنرل اورممبر ریونیوملکرشام تک ریکارڈ مکمل کریں ،ریونیوریکارڈ میں کوئی بھی ردوبدل کا مجازنہیں اگرکچھ واجبات عمران خان کے ذمہ ہیں تووہ بھی ادا کریں ۔ بابر اعوان نے مؤقف اپنایا کہ وزیراعظم لوگوں کیلئے مثال بنیں گے ، جس پرچیف جسٹس بولے کہ ابھی تووہ وزیراعظم نہیں بنے ،اب عمران خان وزیراعظم بننے جارہے ہیں وہ خود اس معاملے کودیکھیں ، مثال قائم کریں گے تولوگ بھی ان کوفالوکریں گے۔

بابراعوان نے کہا کہ وزیراعظم عمران خان کی طرف سے یقین دلاتے ہیں کہ وہ اس معاملے کا جائزہ لیں گے۔ چیف جسٹس نے کہاکہ کسی پٹواری کوحق حاصل نہیں کہ وہ بغیرکسی جوازکہ ریکارڈ میں تبدیلی کرے غلطی کی صورت میں پٹواری ریکارڈ کو درست کرلے، کچھ اشوزپروقت دے دیتے ہیں کیونکہ ابھی نئی حکومت آنی ہے۔ سپریم کورٹ نے سروے آف پاکستان نے 6ہفتوں کی مہلت کی استدعا منظور کرتے ہوئے سماعت ملتوی کردی۔


ای پیپر