Shahmehmood Qureshi BiG Statement in D-8 Summit
07 اپریل 2021 (16:26) 2021-04-07

 اسلام آباد :وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے ڈی ایٹ کانفرنس میں ویڈیو لنک کے ذریعے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ہمیں بدلتی ہوئی دنیا میں اپنی ترجیحات کو سامنے رکھتے ہوئے دنیا کا مقابلہ کرنا ہے ،ہمیں اپنے آپ کو تیار کرنا ہوگا ،انہوں نے کہا پاکستان ڈی ایٹ کانفرنس کو اہمیت دیتا ہے کیونکہ اس پلیٹ فورم کے ذریعے ہم اپنے نوجوانوں کو تعلیم اور روزگار کے بہتر مواقع فراہم کر سکتے ہیں ۔

وزیرخارجہ مخدوم شاہ محمود قریشی نے بنگلہ دیش کی میزبانی میں انیسویں ڈی ایٹ وزارتی کونسل اجلاس میں بذریعہ ویڈیو لنک شرکت کی ،ڈی ایٹ ورچوئل اجلاس میں مصر،پاکستان، بنگلہ دیش ، سری لنکا ، انڈونیشیا ، ملائیشیا ، نائیجیریا اور ترکی شامل ہیں ،وزیر خارجہ نے ڈی ایٹ وزارتی کونسل ورچوئل اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ میں ڈی ایٹ کی سربراہی سے سبکدوش ہونیوالے ترکی کی خدمات کو سراہتا ہوں،میں ڈی ایٹ کی آیندہ سربراہی کے حوالے سے بنگلا دیش کو مبارکباد پیش کرتا ہوں اور ان کی کامیابی کے لیے نیک خواہشات کا اظہار کرتا ہوں۔

 انہوںنے کہاکہ میں ڈی ایٹ تنظیم کو بہتر انداز میں چلانے پر ڈی ایٹ کے سیکرٹری جنرل کو مبارکباد پیش کرتا ہوں، اس کانفرنس کا موضوع بدلتی دنیا کیلئے اشتراک، یوتھ اورٹیکنالوجی کی اہمیت ایک انتہائی اہم موضوع ہے،آج ہم جہاں ٹیکنالوجی کی ترقی دیکھ رہے ہیں وہاں غیر مساوی مواقعوں کی دنیا بھی ہمارے سامنے ہے۔

شاہ محمود قریشی کا کہنا تھا کہ ہم تمام ممالک کوجدیدٹیکنالوجی سے بہرہ ور بنانے کیلئے کوشاں ہیں،ہم پاکستانی نوجوانوں کو تعلیم اور روزگار کے مواقع مہیا کر کے خودمختار بنانے کیلئے اقدامات کر رہے ہیں ،ہمیں دنیا کی بدلتی ہوئی ترجیحات کیلئے اور چیلنجز سے نمٹنے کیلئے اپنے آپ کو تیار کرنا ہوگا،ٹیکنالوجی کا استعمال روابط کے فروغ کا اہم ذریعہ ہے اور خوشی کی بات یہ ہے کہ ڈی ایٹ اس پر توجہ مرکوز کیے ہوئے ہے۔

پاکستان ڈی ایٹ فورم کو خصوصی اہمیت دیتا ہے ،پاکستان نے ڈی ایٹ فورم کے تمام فیصلوں کی توثیق کی ،پاکستان نے گذشتہ چار ماہ کے دوران، چار سیکٹرول اجلاسوں کی میزبانی کی ،یہ پاکستان کی ڈی ایٹ فورم کیساتھ گہری وابستگی کا مظہر ہے۔


ای پیپر