کرونا سے اب تک پوری دنیا میں کتنی ہلاکتیں ہوئیں،حیران کن تفصیلات
07 اپریل 2020 (20:45) 2020-04-07

نیویارک : دنیا بھر میں پھیلے کورونا وائرس سے ہلاکتوں کی تعداد 75 ہزار سے تجاوز کرگئی ، تصدیق شدہ کیسز کی تعداد 13 لاکھ سے بھی زائد ہے۔

عالمی ادارہ صحت اور متعدد عالمی اداروں کی جانب سے بنائے گئے کورونا وائرس کے عالمی آن لائن میپ کے مطابق 7 اپریل کی شام تک کورونا وائرس سے 75 ہزار 973 ہلاکتیں ہوچکی ہیں ، وائرس کے تصدیق شدہ کیسز کی تعداد 13 لاکھ 60 ہزار رہی۔عالمی میپ کے مطابق دنیا بھر میں بیمار ہونے والے مریضوں میں سے 7 اپریل کی شام تک تک 2 لاکھ 91 ہزار 991 افراد صحت یاب بھی ہوچکے تھے، جس میں سے سب سے زیادہ مریض چین میں 77 ہزار کے قریب صحت یاب ہوچکے ہیں۔ دنیا بھر کے 180 سے زائد ممالک کو اپنی لپیٹ میں لینے والی وبا کورونا وائرس کے مرکز چین سے گزشتہ 3 ماہ میں پہلی بار کوئی ہلاکت رپورٹ نہیں ہوئی۔کورونا وائرس کا آغاز دسمبر 2019 میں چینی صوبے ہوبے کے شہر ووہان سے ہوا تھا اور چینی حکومت نے جنوری 2020 میں ہلاکتوں کی تعداد فراہم کرنا شروع کی تھی۔

حکومت کی جانب سے اٹھائے گئے سخت اقدامات کی وجہ سے ہی مارچ 2020 کے آغاز میں چین نے کورونا وائرس پر قابو پالیا تھا اور پہلی بار مارچ کے وسط میں وبا کے مرکز ووہان سے کوئی کیس رپورٹ نہیں ہوا تھا۔چین میں اس وقت تقریبا تین ہزار کے قریب مریض ہسپتالوں میں زیر علاج ہیں اور چینی حکام نے تصدیق کی ہے کہ چین میں پہلی بار 6 اپریل کو کورونا وائرس کی وجہ سے کوئی بھی ہلاکت نہیں ہوئی۔چین میں اب تک متاثرہ افراد کی تعداد 82 ہزار 718 تھی، جس میں سے 3 ہزار 335 کے قریب ہلاکتیں جب کہ 77 ہزار 410 مریض صحت یاب ہوچکے تھے۔امریکی حکام کی جانب سے خطرناک ہفتے کے انتباہ کے بعد رواں ہفتے کے پہلے روز ہی امریکا میں ایک روز میں ایک ہزار 200 کے قریب ہلاکتیں ریکارڈ کی گئیں جس کے بعد کل تعداد 11 ہزار کے نزدیک پہنچ گئی۔امریکا میں کورونا وائرس سے اب تک کل ہلاک ہونے والوں کی تعداد 10 ہزار 993 ہوگئی جبکہ تصدیق شدہ کیسز کی تعداد 3 لاکھ 68 ہزار 449 ہے۔

ایک رپورٹ کے مطابق نیو یارک میں یونیفارم پہنے پولیس اہلکاروں میں سے 20 فیصد کورونا وائرس سے متاثر ہوچکے ہیں جن میں سے 12 پولیس اہلکار ہلاک بھی ہوچکے ہیں۔امریکا ریاست نیو یارک جسے کورونا وائرس کا مرکز بھی کہا جارہا ہے، وائرس سے سب سے زیادہ متاثر ہوا ہے۔ یورپ میں کورونا وائرس سے ہلاکتوں کی تعداد 50 ہزار سے تجاوز کرگئی۔اٹلی، اسپین اور فرانس میں کورونا وائرس سے روزانہ کی بنیاد پر ہونے والی ہلاکتوں میں کمی دیکھی گئی ہے جس وجہ عوام کی جانب سے لاک ڈاؤن احکامات پر عمل کرنا بتایا جارہا ہے۔اٹلی میں گزشتہ دو ہفتوں میں سب سے کم ہلاکتیں ریکارڈ کی گئیں جبکہ تشویش ناک حالت میں مریضوں کی تعداد میں بھی کمی آئی۔اٹلی میں وائرس سے ہلاکتوں کی تعداد 16 ہزار 523 ہوگئی ہے جبکہ ایک لاکھ 32 ہزار 547 تصدیق شدہ کیسز سامنے آچکے ہیں۔

سول پروٹیکشن ایجنسی کی سربراہ اینجیلو بوریلی نے اپنی روزانہ کی بریفنگ میں کہا کہ ہمارے محفاظ کو گرنے نہیں دینا ہے، عوام گھروں میں ہی رہیں،اسپین جہاں اٹلی کے بعد دنیا بھر میں کورونا وائرس سے سب سے زیادہ ہلاکتیں ہوئی ہیں، میں مسلسل چوتھے روز مرنے والوں کی تعداد میں کمی دیکھی گئی،اسپین میں پیر کے روز 637 ہلاکتیں ہوئئیں جو 24 مارچ کے بعد سے کم تر تھیں،اسپین میں کورونا وائرس سے کل ہلاکتوں کی تعداد 13 ہزار 798 ہے جبکہ تصدیق شدہ کیسز کی تعداد ایک لاکھ 40 ہزار 510 ہے۔

وزیر صحت سلواڈور الا نے نیوز کانفرنس کے دوران بتایا کہ ڈٰیٹا اس بات کی تصدیق کرتا ہے کہ لوگوں کو گھروں میں رکھنا کام کر رہا ہے۔فرانس میں کورونا وائرس سے پیر کے روز 357 افراد ہلاک ہوئے جو اس سے ایک روز قبل کے 441 کے مقابلے میں کافی کم تھے۔وزارت صحت کے مطابق لوگوں کے آئی سی یو میں داخل کیا جانا بھی کم ہوگیا ہے،فرانس میں 17 مارچ کو عوام کو گھروں میں رکھنے کا فیصلہ کیا گیا تھا تاکہ وائرس کے پھیلاو کو روکا جاسکے۔جرمن میں 24 گھنٹوں میں تصدیق شدہ وائرس کی تعداد 3 ہزار 834 ہوگئی جس کے بعد مجموعی تعداد 99 ہزار 225 ہوگئی۔واضح رہے کہ گزشتہ 4 دن سے مریضون کی تعداد میں بتدریج اضافہ ہورہا ہے۔غیر ملکی میڈیا کے مطابق ہلاکتوں کی تعداد 173 اضافے کے ساتھ ایک ہزار 607 ہوگئی۔


ای پیپر