ہر ادارہ اپنے دائر کار میں رہ کر کام کرے تو ملک جلد ٹھیک ہو جائے گا،احسن اقبال
07 اپریل 2018 (19:54)

اسلام آباد : وفاقی وزیر داخلہ احسن اقبال نے کہا ہے کہ ہر ادارہ اپنے دائر کار میں رہ کر کام کرے تو ملک جلد ٹھیک ہو جائے گا،آزادی صحافت کا احترام کرتے ہیں ،صحافیوں پر تشدد کرنے یا آواز کچلنے کی مذمت کرتے ہیں، قانون ہاتھ میں لینے والے ہر شخص کیخلاف کارروائی کی جائیگی، چینی باشندے ہمارے مہمان ہیں، پہلے بھی جانوں کے نذرانے دے کر شاہراہ ریشم کی تکمیل کی تھی اب بھی سی پیک کےلئے خدمات سرانجام دے رہے ہیں،سٹرکوں پر دھرنے والے ہی صرف حرمت رسول کے ٹھیکیدار نہیں ، ہر کلمہ پڑھنے والا مسلمان ختم نبوت کا چوکیدار ہے، قوم کو مذہب کے نام پر تقسیم کرنا اور اسے الیکشن کےلئے استعمال کرنا پاکستان کے مفاد میں نہیں ،مذہبی اور سیا سی قیادت کی ذمہ داری بنتی ہے ،نفرت سے گریز کیا جائے ،دوسروں کی پگڑیاں اچھالنے سے بہتر ہے اپنا پیغام عوام تک پہنچائیں، حکومت نے ہارٹیکلچر اور پارکس کی ترقی کےلئے الگ شعبہ بنانے کا اعلان کیا ہے، پاکستان نیشنل ٹورازم اور سپورٹ اتھارٹی قائم کرنے کی سفارش کی ہے، فوڈ اتھارٹی کا بل منظور ہو چکا ہے۔وفاقی وزیر داخلہ احسن اقبال نے یہ بات ہفتہ کو اسلام آباد فیسٹیول کی افتتاحی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہی ۔

احسن اقبال نے کہا کہ اسلام آباد کی تاریخ کے پہلے اسلا آباد فیسٹول کا آغاز کیا جارہا ہے جو آئندہ ہر سال باقاعدگی سے لگے گا۔ انہوں نے کہا کہ ہم پوری دنیا میں اسلام آباد فیسٹول برانڈ کے طور پر متعارف کرائیں گے اور پوری دنیا سے سیاح پاکستان کا رخ کریںگے۔ انہوں نے کہا کہ اسلام آباد کا شمار دنیا کے خوبصورت شہروں میں ہوتا ہے اسے مزید خوب صورت ترین بنانے کےلئے منصوبوں کا آغاز کر دیا گیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ شہریوں کو صاف پانی مہیا کرنے کےلئے کورنگ نالے پر ٹریٹمنٹ پلانٹ لگانے کے لئے کابینہ نے 2.3 ارب روپے کی منظوری دے دی ہے۔ انہوں نے کہا کہ حکومت نے اسلام آباد کے شہریوں کو صاف پانی کی سکیمیں دینے کے لئے آئندہ آنے والے بجٹ میں بھی خطیر رقم مختص کی ہے اور اسلام آباد کو تربیلا ڈیم سے پانی کی فراہمی کے منصوبوں پر کام شروع کر دیا گیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ حکومت نے اسلام آباد میں بہتر ٹرانسپورٹ کی سہولیات کے لئے بھی آئندہ بجٹ میں خطیر رقم رکھی ہے ریپیڈ اور فیڈر بسوں کے منصوبوں پر بھی جلد کام کا آغاز کر دیا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ حکومت نے روات سے فیض آباد تک سٹرک کی توسیع اور بہتر ٹرانسپورٹ سروس چلانے کا بھی فیصلہ کیا ہے تاکہ شہری ٹریفک کے رش کی پریشانی سے بچ سکیں۔ انہوں نے کہا کہ اسلام آباد فوڑ اتھارٹی کا بل منظور ہو چکا ہے جس کے بعد اسلام آباد کے رہائشیوں کو کوالٹی فوڈ کی فراہمی یقینی بنائی جائے گی۔

انہوں نے کہا کہ حکومت نے ہارٹیکلچر اور پارکس کی ترقی کے لئے الگ شعبہ بنانے کا اعلان کیا ہے جس کے لئے بجٹ مختص کر دیا گیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ صوبوں کی ثقافت اور کلچر کو فروغ دینے کے لئے اسلام آباد کی انتظامیہ نے اسلام آباد فیسٹیول کے نام سے تین روزہ تقریبات کا آغاز کیا ہے جس میں پھولوں کی نمائش، مختلف کھیلیں، میراتھن، سائیکل ریس اور دیگر پروگرامزکا انعقاد کیا گیا ہے۔ وزیر داخلہ نے کہا کہ 6 اکتوبر کو کشمیروں کے ساتھ اظہار یکجہتی کے لئے تقریبات کا اہتمام نہیں کیا گیا تھا۔ انہوں نے کہا کہ قومی ادارے جن میں پاک فوج، ایئرفورس اور اسلام آباد پولیس کے بینڈز بھی اپنے فن کا مظاہرہ کریں گے۔ انہوں نے کہا کہ اتوار کو مارگلہ کی پہاڑیوں میں درخت بھی لگائے جائیں گے اور میں تمام اسلام آباد کے رہائشیوں اور خاص طور پر نوجوانوں سے درخواست کروں گا کہ وہ اس شجر کاری مہم میں بڑھ چڑھ کر حصہ لیں تاکہ اسلام آباد کے اصل حسن کو برقرار رکھا جا سکے اور پاکستان کا اصل مثبت تشخص دنیا کے سامنے لایا جا سکے۔ ایک سوال پر وزیر داخلہ نے کہا کہ 18 ویں ترمیم کے بعد کھیل اور سیاحت کے شعبے جو صوبوں کے پاس چلے گئے تھے وہ ہم واپس نہیں لینا چاہتے لیکن پاکستان ٹورازم اور سپورٹ اتھارٹی قائم کرنے کی سفارش کی ہے۔

انہوں نے کہا کہ ہم تمام صوبوں کو ساتھ لیکر چلنا چاہتے ہیں یہی وجہ ہے کہ گزشتہ دو سال سے انٹر صوبائی کھیل کا اہتمام کیا جا رہا ہے۔ ایک اور سوال کے جواب میں احسن اقبال نے کہا کہ ہر ادارہ اپنے دائر کار میں رہ کر کام کرے تو ملک جلد ٹھیک ہو جائے گا۔ وفاقی وزیر داخلہ نے کہا کہ ہم پاکستان میں آزادی صحافت کا احترام کرتے ہیں اور صحافیوں پر تشدد کرنے یا آواز کچلنے کی مذمت کرتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اگر کسی بھی چینل کو بند کیا گیا تو لوگ آ زاد صاف اور شفاف الیکشن پر انگلیاں اٹھائیں گے۔ ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ پاکستان کا قانون جو شخص بھی ہاتھ میں لے گا اس کے خلاف کارروائی ہو گی۔ انہوں نے کہا کہ چینی باشندے ہمارے مہمان ہیں اور پہلے بھی انہوں نے اپنی جانوں کے نذرانے دے کر شاہراہ ریشم کی تکمیل کی تھی اور اب بھی سی پیک کے لئے خدمات سرانجام دے رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ سی پیک اس صدی کا بہترین پروجیکٹ ہے اور ہمارا دشمن اس کے خلاف ہر وقت سازش کرنے میں مصروف ہے۔ وفاقی وزیر داخلہ نے کہا کہ بھارتی جاسوس کلبھوشن یادیو نے بھی اعتراف کیا ہے کہ وہ پاکستان میں سی پیک کے خلاف سازشوں میں ملوث تھا۔

وفاقی وزیر داخلہ نے کہا کہ میں مذہبی قیادت سے درخواست کرتا ہوں کہ ہمارے دشمن پاکستان کو دنیا میں مذہبی جنونی کے طور پر پیش کرنے کی کوشیش کر رہے ہیں اور ہمارے دشمن یہ بیانہ پیش کر رہے ہیں کہ پاکستان کے ہتھیار شدت پسندوں کے ہاتھ لگنے کا خطرہ ہے ہم امن کے ذریعے اس سازش کو ناکام بنائیں۔ انہوں نے کہا کہ سٹرکوں پر دھرنے والے ہی صرف حرمت رسول کے ٹھیکیدار نہیں ہیں باقی سب کافر ہیں قائد اعظم کا یہ پاکستان نہیں ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہر کلمہ پڑھنے والا مسلمان ختم نبوت کا چوکیدار ہے۔ احسن اقبال نے کہا کہ پاکستانی قوم کو مذہب کے نام پر تقسیم کرنا اور اسے الیکشن کے لئے استعمال کرنا پاکستان کے مفاد میں نہیں ہے اس سے دشمن فائدہ اٹھا سکتا ہے۔ انہوں نے کہاکہ دوسری مرتبہ حکومت اپنے پانچ سال پورے کر کے انتخابات کی طرف جا رہی ہے اور دنیا نے پاکستان کےلئے دوربین لگا رکھی ہے جنونی سیاست اور مذہبی جنون سے اس ملک کو الگ رکھ کر دنیا کو بتانا ہو گا کہ پاکستان پر امن جمہوری ملک ہے۔

انہوں نے کہا کہ دھرنے ملکی ترقی کےخلاف ہیں جو بھی شخص ختم نبوت پر پہرہ نہیں دیتا وہ مسلمان نہیں ہے۔ انہوں نے کہاکہ دھرنا ختم کرانے کے حوالے سے ہم پر بہت تنقید کی گئی اگر فیض آباد دھرنہ ختم نہ کرتے تو ملک میں تین روز کے اندر اندر فساد شروع ہو جانا تھا۔انہوں نے کہا کہ میں بیرون ملک کانفرنس میں شرکت کرنے کے لئے گیا تو ہر شخص نے وہاں فیض آباد دھرنے کا سوال کیا تھا۔ انہوں نے کہا کہ ہمیں ذمہ داری کے ساتھ چلنا ہو گا دشمن کی کوشش ہو گی کہ جنرل الیکشن کے دوران محاذ آرائی کر کے ملک کو غیر مستحکم کیا جا سکے۔ انہوں نے کہا کہ تمام مذہبی اور سیا سی قیادت کی ذمہ داری بنتی ہے کہ نفرت سے گریز کیا جائے اور دوسروں کی پگڑیاں اچھالنے سے بہتر ہے کہ اپنا پیغام عوام تک پہنچائیں۔


ای پیپر