افغا ن مسئلے کاحل جنگ نہیں،وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی کا بیان
07 اپریل 2018 (18:25)

اسلام آباد:وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی نے کہا ہے کہ دورہ افغانستان کا مقصد افغان لیڈر شپ سے تعارف تھا، ان سے بہت اچھی ملاقاتیں ہوئی ، ملاقاتوں میں اتفاق کیا گیا کہ افغا ن مسئلے کا حلجنگ میں نہیں ، مستحکم افغانستان اور امن پاکستان کےلئے ضروری ہے، اس کےلئے ہمیں مل کر کام کرنا ہے،ملاقات میں ہم نے بہت سی چیزوں پر قابو پایا، اب ہمیں اپنے عمل سے ثابت کرنا ہے کہ ہم خطے ، خطے کی عوام اور خوشحالی سے مخلص ہیں۔

ہفتہ کو وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی نے اپنے ایک بیان میں کہا ہے کہ افغانستان میں بنیادی طور پر ان کی لیڈر شپ سے تعارف تھا، بہت اچھی ملاقاتیں ہوئی، اشرف غنی سے چیف ایگزیکٹو عبداللہ عبداللہ، حکمت یار اور دیگر اہم سیاسی رہنماﺅں سے ملاقات ہوئیں اور کھل کر بات چیت ہوئی ہے اور اس بات پر اتفاق کیا گیا کہ افغانستان کا مسئلہ جنگ میں نہیں ہے، مستحکم افغانستان اور امن پاکستان کےلئے ضروری ہے اور پاکستانی عوام کےلئے بھی ضروری ہے اور اس کےلئے ہمیں مل کر کام کرنا ہے اور اس کےلئے ہماری کوشش ہے کہ افغانستان کی عوام ہی اس کا حل تلاش کریں اور مل بیٹھ کر بات چیت کریں اور ہم سب مل کر ان کی مدد کریں تا کہ افغانستان میں امن لایا جا سکے، اس کے ساتھ ساتھ یہ بھی فیصلہ کیا گیا کہ روڈ، ریلوے،پاور پراجیکٹس پر بھی فیصلہ ہوا کہ مل کر کام کریں گے.

گیس کے منصوبے پر بھی مل کر کام کیا جائے گا تا کہ خطے کے عوام کےلئے خوشحالی آ سکے، سینٹرل ایشیاءسے تمام ممالک افغانستان سے گزر کر گوادر پورٹ کو استعمال کر سکیں اور یہ خطہ ترقی کر سکے، ان سب چیزوں پر اتفاق کیا گیا اور اچھے ماحول میں بات چیت ہوئی، ہمیں امید ہے کہ یہ دورہ ایک اہم سنگ میل ثابت ہو گا پاک افغانستان کے ساتھ تعلقات میں بھی اور علاقے میں امن کےلئے بھی ۔ انہوں نے کہا کہ گزشتہ روز کی ملاقات میں ہم نے بہت سی چیزوں پر قابو پایا اور اب ہمیں اپنے عمل کے ذریعے ثابت کرنا ہے ہے کہ ہم خطے سے، خطے کی عوام سے اور خوشحالی سے مخلص ہیں۔


ای پیپر