اپنی سیاست نہیں ،ریاست بچانے آیا ہوں ،مولانا فضل الرحمان
06 نومبر 2019 (16:48) 2019-11-06

اسلام آباد:جمعیت علمائے اسلام کے سربراہ مولانا فضل الرحمان نے کہا ہے کہ میں اپنی سیاست نہیں ،،ریاست ،، بچانے آیا ہوں ہماری جماعت کا چارٹر آف ڈیمانڈ پوری قوم کا مشترکہ ون پوائنٹ ایجنڈا ہے جس پر سمجھوتے کا سوال ہی پیدا نہیں ہوتا کپتان اور اسکی حکومت کواپنے کردار اور عمل پر نظر ثانی کرنا ہوگی ہم اپنے اصولی موقف سے دستبردار ہونے کا تصور بھی نہیں کرسکتے۔

ان خیالات کا اظہار انھوں نے تحریک جوانان پاکستان کے چیئرمین محمد عبداللہ حمید گل سے گفتگو کے دوران کیا۔جنہوں نے مولانا کی رہائشگاہ پر موجودہ صورتحال کے تناظر میں امیر جے یو آئی سے تفصیلی نشست کی ، جس میں محمد عبداللہ حمید گل اور مولانا فضل الرحمان کے مابین آزادی مارچ اور اس کے کے مطالبات سمیت ڈیڈلاک سے پیدا ہونے والی بحرانی سیاسی صورت حال کے تمام پہلووں پر کھل کے تبادلہ خیال کیا گیا ہے ۔

اس موقع پر چیرمین تحریک جوانان پاکستان محمد عبداللہ حمید گل نے کہا کہ حکومت کو جے یو آئی کے مطالبات پر غور و فکر کرنی چاہیے انھوں نے وزیر اعظم کو مشورہ دیا کہ وہ آزادی مارچ کے جائز مطالبات تسلیم کر نے میں انکو کوئی عار محسوس نہیں چاہئے اس کے لیے وزیر اعظم سیاسی وسعت قلبی کا مظاہرہ کرنا ہوگا حکومت جذبات اور سخت گیر لب و لہجے کا نام نہیں یوتی بلکہ حکومت تو صبر و تحمل کی ایک روشن مثال کا نام ہے جو تاحال ہماری قوم کے لیے نایاب ہے انھوں نے کہا کہ مذکراتی کمیٹی میں مولانا کے سیاسی حریفوں کو نکال کے ریاست اور مولانا کے ہم خیال لوگوں کو شامل کیا جاے تاکہ سیاسی بحران سے نکلنے کے درمیانی راستے کی راہ ہموار ہوسکے انکا کہنا تھا کہ حکومت کو اپنے سیاسی لب ولہجے پر بھی نظر ثانی کرنی چاہیے ۔

عبداللہ گل نے کہا کہ مولانا میرے بزرگ ہیں ان کے ساتھ عزت اور احترام کا رشتہ ہمارے خاندان کے ساتھ ایک قدیم روایات کا امین ہے اور میں حکومت اور سرکار ترجمان کے طور نہیں بلکہ ریاست کے نمائندے کے طور پر جے یو آئی کےسربراہ سے ملاقات کی ہے ریاست اسکے ادارے ملک اور قوم کی سلامتی کےضامن ہوتے ہیں ،جن پر پوری قوم ناز کرتی ہےاس پر موقع پر اظہار خیال کرتے ہوئے مولانا فضل الرحمان نے دوٹوک الفاظ میں کہا ہے کہ آزادی مارچ اوراسکے مطالبات کے اسباب اور جواز حکومت نے خود فراہم کیا ہے اور آزادی مارچ ہی حقیقی معنوں میں ملک اور قوم کے لیے نجات دہندہ ثابت ہوگا۔


ای پیپر