احتجاج کے دوران نقصان کرنے والوں کیخلاف چیف جسٹس کا نوٹس
06 نومبر 2018 (22:43) 2018-11-06

اسلام آباد :آسیہ بی بی کی بریت کیخلاف ہونے والے مظاہروں میں توڑ پھوڑ کا چیف جسٹس ثاقب نثار نے نوٹس لے لیا ،فیصلے کیخلاف مظاہروں میں عوام کے جان و مال ،سرکاری املاک کے نقصان سے متعلق وفاقی اور صوبائی حکومتوں سے رپورٹ طلب کر لی ہے ۔

تفصیلات کے مطابق چیف جسٹس نے دھرنوں کے نقصانات پر حکومت سے جواب طلب کر لیا ہے اور واقعہ میں ملوث افراد کے بارے میں تحقیقات کا حکم بھی دیا ہے،ان مظاہروں کے دوران متعدد موٹر سائیکلوں، رکشوں، گاڑیوں، بسوں اور پولیس گاڑیوں کو نقصان پہنچایا گیا اور ملک بھر کے بڑے شہروں کی اہم شاہراہیں بھی بند رہیں۔

واضح رہے کہ سپریم کورٹ نے 30 اکتوبر کو فیصلہ سناتے ہوئے آسیہ بی بی کو بری کرنے کا حکم دیا تھا جس کے بعد تحریک لبیک پاکستان نے ملک بھر میں احتجاج مظاہرے کئے۔

چیف جسٹس نے امن و امان کے معاملے پر ازخو نوٹس لیتے ہوئے دھرنوں کے دوران ہونے والے نقصانات پر وفاقی و صوبائی حکومتوں سے تین دن میں جواب طلب کرلیا، چیف جسٹس ثاقب نثار کا کہنا ہے کہ نوٹس لینے کا مقصد دھرنوں سے متاثرہ افراد کے نقصان کا ازالہ کرنا ہے ۔

نوٹس میڈیا پر چلنے والی خبروں پر لیا گیا ہے، چیف جسٹس نے نقصان پر تفصیلی رپورٹ بھی طلب کرلی ہے۔


ای پیپر