افغان چیف ایگزیکٹو عبداللہ عبد اللہ اور حامد کر زئی بال بال بچ گئے
06 مارچ 2020 (16:59) 2020-03-06

کابل: افغان امریکہ امن معاہد ہ کے بعد طالبان نے اپنے مطالبات پورے نہ ہونے پر دارلحکومت میں دوبارہ حملے شروع کر دئیے،ایک تقریب کے دوران بم دھماکے میں افغان چیف ایگزیکٹو عبد اللہ عبد اللہ بال بال بچ گئے ،جبکہ حملے میں 27 ګکے قریب افراد جاں بحق ہو گئے ہیں۔

تفصیلات کے مطابق دارالحکومت کابل میں حزب وحدت پارٹی کے رہنما عبدالعلی مزاری کی 25 ویں برسی کی تقریب کے دوران دھماکا ہوا،مقامی میڈیا کی رپورٹس میں بتایا گیا ہے کہ دھماکا اس وقت ہوا جب افغانستان کی اعلیٰ امن کونسل کے سربراہ محمد کریم خلیل تقریر کررہے تھے جب کہ دھماکے کے وقت افغان چیف ایگزیکٹو عبداللہ عبداللہ ، سابق صدر حامد کرزئی اور دیگر اہم سیاسی رہنما بھی تقریب میں شریک تھے۔

سیکنڈ چیف ایگزیکٹو نے بتایا کہ دھماکے میں چیف ایگزیکٹو عبداللہ عبداللہ اور حامد کرزئی محفوظ رہے، افغان میڈیا کا کہنا ہےکہ مسلح حملہ آور نے تقریب کے مقام کے قریب واقع زیر تعمیر عمارت سے حملہ کیا جب کہ اب تک کسی گروپ نے حملے کی ذمہ داری قبول نہیں کی، افغان میڈیا کے مطابق طالبان نے ٹوئٹر کے ذریعے حملے میں کسی بھی طرح سے ملوث ہونے کی خبروں کو مسترد کردیا ہے۔

افغان میڈیا کا بتانا ہےکہ گزشتہ سال بھی اس تقریب پر حملہ کیا گیا تھا جس میں 11 افراد جاں بحق ہوئے تھے۔


ای پیپر