فائل فوٹو

کرونا سے امریکی معیشت کو نقصان کا اندیشہ ہے، ٹرمپ
06 مارچ 2020 (11:22) 2020-03-06

واشنگٹن: امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے تسلیم کیا ہے کہ کرونا وائرس سے امریکی معیشت کو بھی نقصان پہنچ سکتا ہے۔ کرونا وائرس سے امریکا میں اموات مسلسل بڑھ رہی ہیں جس سے اسٹاک مارکیٹ بھی مسلسل دوسرے ہفتے مندی کا شکار ہے جبکہ ایئر لائن انڈسٹری کو وائرس سے 113 ارب ڈالر نقصان کا خدشہ ہے۔

 ایس اینڈ پی فائیو ہنڈریڈ انڈیکس 3 فیصد سے بھی نیچے جا گرا ہے، ایئر لائنز کے شیئر کی قدر سب سے زیادہ گری ہے جبکہ صنعتی ، مالیاتی اور انرجی اسٹاک بھی بری طرح مندی کا شکار ہے۔

کرونا کے سبب دنیا بھر میں لوگوں نے بیرون اور اندرون ملک سفر میں کمی کر دی ہے جس سے ایئر لائن انڈسٹری سب سے زیادہ متاثر ہے جبکہ اپنی منزلوں پر جانیوالے جہازوں کی اکثر نشستیں خالی ہیں اور ایئر پورٹ اجڑ گئے ہیں ۔

کرونا سے ایک کے بعد دوسری صنعت متاثر ہونے کے خدشات بڑھ گئے ہیں۔ وائرس سے امریکا کی ریاست میری لینڈ بھی متاثر ہوئی ہے۔

ریاست کے گورنر کے مطابق اوورسیز سے آنیوالے شخص کے ذریعے بیماری پھیلی ہے جبکہ کیلی فورنیا میں ایمرجنسی نافذ ہے جہاں ساحل پر ایک جہاز کو روک لیا گیا ہے اور اس کے 2500 مسافروں کا کرونا ٹیسٹ لیا گیا ہے۔

امریکی میڈیا کے مطابق ایک پالتو کتا بھی کرونا بیماری کا شکار ہوا ہے جس سے یہ خدشہ ظاہر کیا جا رہا ہے کہ بیماری نہ صرف انسان سے انسان بلکہ انسان سے جانور میں بھی منتقل ہو رہی ہے۔

اسٹاک مارکیٹ مسلسل دوسرے ہفتے گرنے کے بعد امریکا کے صدر ٹرمپ نے بھی تسلیم کر لیا ہے کہ الیکشن کے اس برس میں کرونا سے ملکی معیشت کو نقصان پہنچ سکتا ہے۔


ای پیپر