سینٹ الیکشن میں تحریک انصاف کے 15کھلاڑی ہارس ٹریڈنگ میں ملوث نکلے
06 مارچ 2018 (15:22)

 اسلام آباد: تحریک انصاف کی شفافیت ،کرپشن کے نعرے لگانے والی جماعت کے اپنے ہی کھلاڑی ہارس ٹریڈنگ میں ملوث نکلے ۔جی ہاں سینٹ الیکشن میں کپتان کو اپنی ٹیم میں شامل کئی اراکین کا ہارس ٹریڈنگ میں ملوث ہونے کے بعد سخت ترین کاروائی کرتے ہوئے وزیر اعلیٰ کے پی کے کو احکامات دئیے کہ فوری کاروائی کر کے بتایا جائے تاکہ سخت ترین کاروائی کی جائے ۔ سینیٹ الیکشن میں ہونے والی ہارس ٹریڈنگ میں پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے 15 ارکان صوبائی اسمبلی کے ملوث ہونے کا انکشاف ہوا ہے۔

چیرمین پی ٹی آئی عمران خان نے وزیر اعلیٰ خیبرپختون خوا پرویز خٹک کو سینیٹ انتخابات میں ہارس ٹریڈنگ کی تحقیقات کی ہدایت کی تھی۔ذرائع کے مطابق پرویز خٹک نے سینیٹ الیکشن میں ہارس ٹریڈنگ کی انکوائری رپورٹ تیار کر لی ہے۔رپورٹ میں انکشاف کیا گیا کہ پی ٹی آئی کے 15 ارکان صوبائی اسمبلی نے پیسے لے کر اپنے ووٹ بیچے۔ ہارس ٹریڈنگ میں ملوث ارکان میں زاہد درانی، عبید میر، افتخار مشوانی، عبدالحق، قربان خان، شاہ فیصل، گل شاہد خان، جاوید نسیم، محب اللہ، نگینہ، دینہ ناز، زرین ضیاء، نرگس، خاتون بی بی اور یٰسین خیل شامل ہیں۔

پی ٹی آئی چیرمین عمران خان نے پارٹی کا مشاورتی اجلاس آج بنی گالہ میں طلب کرلیا ہے جس میں سینیٹ انتخابات کے بعد کی صورتحال کا جائزہ لیا جائے گا۔ خیبرپختون خوا میں چند ارکان اسمبلی کے باوجود پیپلز پارٹی سینیٹر منتخب ہونے کا معاملہ بھی زیر بحث آئے گا۔ زرائع کے مطابق سینیٹ کے چیئر مین اور ڈپٹی چیئر مین کے لیے مشاورت کی جائے گی، جہانگیر ترین نو منتخب آزاد سینیٹرز کے ساتھ رابطوں کی رپورٹ دیں گے۔


ای پیپر