نیب نے ایل این جی ٹرمینل ٹھیکہ پر نواز شریف کیخلاف انکوائری کی منظوری دیدی
06 جون 2018 (20:25) 2018-06-06


اسلام آباد : نیب نے سابق وزرائے اعظم محمد نواز شریف اور شاہد خاقان عباسی ودیگر کیخلاف اختیارات کے ناجائز استعمال، قواعد کے برخلاف من پسند کمپنی کو ایل این جی ٹرمینل کا15 سالہ ٹھیکہ دینے کے الزام میں انکوائری کی منظوری دیدی ۔


قومی احتساب بیورو کے ایگزیکٹو بورڈ کا اجلاس بدھ کو قومی احتساب بیورو کے چیئرمین ب جسٹس جاوید اقبال کی زیرصدارت نیب ہیڈکوارٹر ز اسلام آبادمیں منعقد ہوا۔ا جلاس میں کہا گیا کہ نیب اس بات کو واضح کرنا چاہتا ہے کہ تمام انکوائریاں اورانویسٹی گیشن مبینہ الزامات کی بنیاد پر شروع کی گئی ہیں جوکہ حتمی نہیں، نیب تمام متعلقہ افراد سے قانو ن کے مطابق ان کا موقف معلوم کرے گا تاکہ قانو ن کے مطابق کارروائی عمل میں لائی جا سکے ۔ نیب کے ایگزیکٹو بورڈ اجلاس نے سابق وزیراعظم نواز شریف ،سابق وزیرپٹرولیم شاہد خاقان عباسی اور دیگر کے خلاف اختیارات کا ناجائز استعمال کرتے ہوئے قواعد کے بر خلاف من پسند کمپنی کوایل این جی ٹرمینل کا 15سال کیلئے ٹھیکہ دینے کے الزام میں انکوائری کی منظوری دی جس سے قومی خزانے کو مبینہ طور پراربوں روپے کا نقصان پہنچانے کا الزام ہے۔


ایگزیکٹو بورڈ اجلاس نے سابق وزیر اعلی سندھ ،سابق سیکرٹری، کلچر ٹورزم اینڈ اینٹیک ڈیپارٹمنٹ حکومت سندھ کے افسران/اہلکاران اوردیگر کے خلاف انوسٹی گیشن کی منظوری دی۔ ملزمان پرمبینہ طور پر اختیارات کا ناجائز استعمال کرتے ہوئے سندھ کلچرل فیسٹیول 2014میں قواعد کے بر خلاف ٹھیکہ دینے اور بدعنوانی کا الزام ہے۔ جس سے قومی خزانے کو تقریبا127ملین روپے کا نقصان پہنچا۔ ایگزیکٹو بورڈ اجلاس نے سابق وزیر اعلی پنجاب ،متعلقہ سیکرٹریز،چنیوٹ سے سابق ایم پی اے اور رمضان شوگر ملز لمیٹیڈ چنیوٹ کی انتظامیہ کے خلاف انکوائری کی منظوری دی۔ ملزمان پرمبینہ طور پراختیارات کا ناجائز استعمال کرتے ہوئے قومی خزانے کوبھاری نقصان پہنچانے کا الزام ہے۔ نیب کے ایگزیکٹو بورڈ اجلاس نے سابق چئیرمین کراچی پورٹ ٹرسٹ وائس ایڈمرل ریٹائرڈ احمد حیات، سابق جنرل منیجر کے پی ٹی بریگیڈیئر ریٹائرڈ سید جمشید زیدی اورمیسرز کراچی انٹرنیشنل کنٹینرز ٹرمینل کے خلا ف بدعنوانی کاریفرنس دائر کرنے کی منظوری دی۔


ملزمان پرمبینہ طور پراختیارات کا ناجائز استعمال کرتے ہوئے غیر قانونی طور پر کنٹریکٹ میں توسیع کرنے کا الزام ہے۔ جس سے قومی خزانے کو تقریبا21 ارب روپے کا روپے کا نقصان پہنچا۔ایگزیکٹو بورڈ اجلاس نے سابق صوبائی وزیر بلوچستان شیخ جعفر خان اور ڈپٹی ڈائریکٹر واٹر مینجمنٹ عبد الطیف خان کے خلاف انکوائری کی منظوری دی۔ ملزمان پر مبینہ طور پر اختیارات کا ناجائز استعمال اور آمدن سے زائد اثاثے بنانے کا الزام ہے۔ ایگزیکٹو بورڈ اجلاس نے سابق صوبائی وزیر براے جنگلات بلوچستان عبیدا للہ بابت اور دیگر کے خلاف انکوائری کی منظوری دی۔ ملزمان پرمبینہ طور پر اختیارات کا ناجائز استعمال کرتے ہوئے سرکاری فنڈز میں خردبرد اور آمدن سے زائد اثاثے بنانے کاالزام ہے۔ جس سے قومی خزانے کو بھاری نقصان پہنچا۔


ای پیپر