سعودی عرب نے حج کیلئے نئے قواعد و ضوابط جاری کردئیے
06 جولائی 2020 (16:26) 2020-07-06

مکہ مکرمہ: سعودی عرب نے رواں سال حج سے متعلق نئے قواعدوضوابط جاری کردیئے ہیں جو مسجدالحرام، منی، میدان عرفات، مزدلفہ اورقیام وطعام سے متعلق ہیں۔عازمین حج اورحج عملے کو ماسک اور دستانے پہننا ہوں گے۔

تفصیلات کے مطابق حجاج کرام کے سر کے بال تراشنے والے ایک دوسرے کے آلات استعمال نہیں کرسکیں گے۔عازمین حج نمازکے دوران ایک دوسرے سے2میٹرفاصلے کی پابندی کریں گے۔ رمی کیلئے حجاج کو پیک شدہ کنکریاں فراہم کی جائیں گی۔طواف کیلئے مطاف جانیوالوں کی قافلہ بندی ہوگی۔ طواف کے دوران کم از کم ڈیڑھ میٹرکا فاصلہ رکھنا ہوگا۔ حج کے نئے قواعدوضوابط کے مطابق خانہ کعبہ یا حجراسود کوچھونا منع ہوگا۔چھونے اور چومنے سے روکنے کے لیے رکاوٹیں رکھی جائیں گی۔ اس پر عمل درآمد کے لیے نگراں تعینات ہوں گے۔مسجد الحرام میں کھانیکی اشیا لانے پرپابندی ہوگی۔ صحن میں کھانیکی اجازت نہیں ہوگی۔

پانی پینے یازمزم پانی کے لیے قابل تلف(ڈسپوزیبل)بوتلیں اور ڈبیاستعمال کیے جائیں گے۔کھانے پینے کے برتن دوبارہ استعمال کرنیکی اجازت نہیں ہوگی اور بسوں میں عازمین کی تعداد متعین ہوگی۔پورے سفر کے دوران ہر حاجی کی نشست متعین ہوگی۔ کسی بھی حاجی کو بس میں کھڑے ہونے کی اجازت نہیں ہوگی۔18 جولائی 2020، 28 ذیقعد سے 12 ذی الحج تک منی، مزدلفہ اور عرفات میں اجازت کے بغیر جانا منع ہوگا۔لفٹ استعمال کرتے وقت سماجی فاصلہ برقرار رکھنا ہوگا۔ ذاتی صفائی کا ہر حاجی کے لیے دھیان رکھنا ضروری ہوگا۔ سینیٹائزر نمایاں مقامات پر رکھنا ہوں گے۔


ای پیپر