حکومت ڈیزل پر فی لیٹر 45روپے وصول کر رہی ہے
06 دسمبر 2019 (17:55) 2019-12-06

اسلام آباد : حکومت نے اعتراف کیا ہے کہ وہ ڈیزل پر فی لیٹر 45روپے جبکہ پٹرول پر فی لیٹر35روپے ٹیکس وصول کر رہی ہے،ریونیوکے اہداف کو پورا کرنے کیلئے پٹرولیم مصنوعات پر ٹیکسز عائد کئے جاتے ہیں جنہیں ختم نہیں کر سکتے۔

قومی اسمبلی کے اجلاس میں حکومت نے پٹرولیم مصنوعات پر عائد ٹیکس کی تفصیلات پیش کر دیں، ڈیزل کی فی لیٹر قیمت فروخت125روپے ہے جس میں صرف 45روپے 75پیسے صرف ٹیکس وصول کیا جا رہا ہے،اسی طرح پٹرول کی قیمت فروخت113.99پیسے ہے جس میں فی لیٹرٹیکس 35.07روپے ہے، اسی طرح مٹی کے تیل کی قیمت فروخت 96.23روپے فی لیٹر ہے جس میں 20روپے فی لیٹر ٹیکس وصول کیا جا رہا ہے۔

 اسی طرح لائٹ ڈیزل کی قیمت فروخت82.43روپے ہے جس میں سے 14.98روپے فی لیٹر ٹیکس وصول کیا جا رہا ہے، حکومت کا کہنا ہے کہ ملک کی نمو و ترقی کیلئے میزانیائی ریونیو کے اہداف پورا کرنے کیلئے پٹرولیم مصنوعات پر ٹیکسز /لیویز عائد کئے جاتے ہیں لہٰذا ٹیکسز ختم نہیں کئے جا سکتے۔


ای پیپر