فوٹو بشکریہ ٹوئٹر

ترکی نے سعودی ولی عہد محمد بن سلمان کے 2 سابق مشیروں کے وارنٹ گرفتاری جاری کر دیئے
06 دسمبر 2018 (12:57) 2018-12-06

انقرہ: ترکی نے سعودی ولی عہد محمد بن سلمان کے 2 سابق مشیروں احمد العسیری اور سعود القحطانی کے وارنٹ گرفتاری جاری کر دیئے۔

ترک میڈیا کے مطابق عدالتی دستاویز میں ملزمان کو سعودی صحافی کے قتل کا منصوبہ ساز قرار دیا گیا ہے۔ سعودی عرب کی جانب سے خشوگی کے سفارت خانے میں قتل کے اعتراف کے بعد دونوں کو برطرف کر دیا گیا تھا۔

دوسری جانب امریکی وزیر دفاع جیمز میٹس نے کہا ہے کہ جمال خشوگی کے قتل پر کچھ کہنے سے پہلے مزید شواہد درکار ہیں۔ فی الحال انہیں علم نہیں کہ آگے کیا ہوگا اور کسے قتل کا ذمہ دار قرار دیا جائے گا۔

واضح رہے کہ ترک صدر رجب طیب اردوان نے کہا تھا کہ صحافی خشوگی کے قتل کی تحقیقات سے سعودی شاہی خاندان یا سعودی حکومت کو نشانہ نہیں بنا رہے۔ یہ ضروری نہیں کہ سعودی شہزادے محمد بن سلمان قتل میں ملوث ہیں۔ حکم اعلیٰ سطح سعودی حکام میں سے دیا گیا۔ انہوں نے کہا کہ تحقیقات سے سعودی شاہی خاندان کو فائدہ ہوگا۔

خیال رہے کہ سعودی عرب کے پراسیکیوٹر جنرل نے اعلان کیا تھا کہ جمال خشوگی کو سعودی عرب کے قونصل خانے میں داخل ہونے کے بعد لڑائی جھگڑے کے دوران مار دیا گیا تھا۔ سعودی عرب جمال خشوگی کی موت کے ذمہ دار 18 افراد سے تفیش کر رہا ہے۔ یہ تمام افراد سعودی شہری ہیں اور انہیں حراست میں لیا گیا ہے۔


ای پیپر