پاکستان میں کویت سے بھی بڑا تیل کا ذخیرہ

06 اگست 2018 (22:23)

کراچی:نگراں وزیرِ خارجہ عبداللہ حسین ہارون نے فیڈریشن آف پاکستان چیمبرز آف کامرس اینڈ انڈسٹری (ایف پی سی سی آئی) کے عہدیدار تاجروں اور صنعتکاروں سے گفتگو میں انکشاف کیا ہے کہ پاکستان میں جلد ہی تیل کے بہت وسیع ذخائر دریافت ہونے کی امید ہے جس کے بعد پاکستان دنیا میں تیل بر آمد کرنے والے 10 بڑے ملکوں میں شامل ہوجائے گا۔

میڈیارپورٹس کے مطابق عبداللہ حسین ہارون نے بتایا کہ امریکی کمپنی ایگزون موبل (ExxonMobil) پاک ایران سرحد کے نزدیک خاصی گہرائی تک کھدائی کرچکی اور قوی امید ہے کہ اس جگہ تیل کے بہت وسیع ذخائر موجود ہیں جو مقدار میں کویت کے ذخائر سے بھی بڑے ہیں۔انہوں نے کہا کہ اگر تیل کے یہ ذخائر ہماری توقعات کے مطابق وسیع ہوئے تو پاکستان تیل کی پیداوار میں کویت کو بھی پیچھے چھوڑ دے گا اور تیل بر آمد کرنے والے بڑے ممالک کی فہرست میں چھٹے نمبر پر آجائے گا۔

کویت کے پاس دنیا بھر میں تیل کے ذخائر کا 8.4 فیصد حصہ موجود ہے جس کا تخمینہ 101.50 ارب بیرل لگایا گیا ہے جبکہ مزید 50 کروڑ بیرل تیل سعودی عرب اور کویت کے درمیان واقع نیوٹرل زون میں بھی موجود ہے۔عبداللہ حسین ہارون کا مزید کہنا تھا کہ حکومتِ پاکستان نے ایگزون موبل سے جنریشن کمپلیکس تعمیر کرنے کا معاہدہ بھی کرلیا ہے جس پر 10 ارب ڈالر کی لاگت آئے گی جبکہ اس کمپنی کو پورٹ قاسم پر ایل این جی برتھ تعمیر کرنے کی اجازت بھی دے دی گئی ہے۔

واضح رہے کہ ایگزون موبل دنیا کی چوتھی بڑی آئل کمپنی ہے جس کا کاروبار کئی ممالک میں پھیلا ہوا ہے۔ سابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی نے اپنی وزارتِ عظمی کے آخری دنوں میں اس کمپنی کے ساتھ مختلف معاہدے کیے تھے جن کے تحت ایگزون موبل کو پاکستان کی سمندری حدود میں تیل کی تلاش کا 25 فیصد حصہ دیا گیا تھا۔

مزیدخبریں