Source : Yahoo

شہباز شریف وزارت عظمیٰ کیلئے نامزد
06 اگست 2018 (19:47) 2018-08-06

لاہور:پاکستان مسلم لیگ ( ن ) نے پارٹی صدر میاں شہباز شریف کو وزارتِ عظمی کیلئے امیدوار نامزد کر دیا ہے‘ اس سے قبل آل پارٹیز کانفرنس میں بھی انھیں مشترکہ امیدوار کے طور پر سامنے لانے کا فیصلہ کیا تھا۔

پیر کو پاکستان مسلم لیگ ( ن )کے صدر شہباز شریف کی زیر صدارت ورکنگ کمیٹی کا اعلیٰ سطح کا اجلاس ہوا ‘اجلاس جس میں پاکستان مسلم لیگ ( ن )کے اہم اور مرکزی رہنما و¿ں نے شرکت کی ‘اجلاس میں وفاق اور پنجاب کی سیاسی صورتحال سے متعلق معاملات پر غور کیا گیا ‘اجلاس میں وزیراعظم کے امیدوار اور پنجاب میں اپوزیشن لیڈر کے حوالے سے بھی تفصیلی مشاورت کی گئی۔

ذرائع کے مطابق اجلاس میں گلگت کے علاقے چلاس میں لڑکیوں کے اسکولوں کو جلانے کی شدید الفاظ میں مذمت کی گئی ۔اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے شہباز شریف کا کہنا تھا کہ حکومت سازی کےلئے تمام آپشنز پر غور کیا جا رہا ہے‘ بصورت دیگر مرکز اور پنجاب میں اپوزیشن کا بھرپور کردار ادا کریں گے اور تمام سیاسی حلیفوں کو ساتھ لے کر چلیں گے۔اجلاس میں پارٹی صدر شہباز شریف نے وفاقی دارالحکومت اسلام آباد میں 3روز قیام کرنے کے حوالے سے اپنی سرگرمیوں کے بارے میں آگاہ کیا ۔

اجلاس میں سابق صوبائی وزیر تعلیم رانا مشہود نے پنجاب میں اکثریت ملنے کا دعویٰ کرتے ہوئے کہا کہ حکومت سازی کےلئے نمبرز گیم حوصلہ افزا ہے‘پنجاب میں حکومت سازی کےلئے مطلوبہ تعداد پوری کر لی جبکہ وفاق میں بھی بات چیت جاری ہے۔بعدازاں ترجمان پاکستان مسلم لیگ ( ن ) مریم اورنگزیب نے میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ شہباز شریف کو وزارتِ عظمی کا امیدوار نامزد کر دیا گیا ہے‘پنجاب میں نمبرز گیم پر ہی فیصلہ ہو گا‘ ہم آزاد امیدواروں سے رابطے میں ہیں‘ تاہم جہاں آزاد امیدواروں کی نوٹوں کی منڈی لگی ہو‘ وہاں ( ن ) لیگ ایسی سیاست نہیں کرے گی۔

انہوں نے کہا کہ عمران خان نے خیالی اور خود ساختہ وزیرِاعظم بننے کے بعد جو تقریر کی اس کی لاج رکھیں‘جتنے حلقے چاہیں گے وہ کھولنے کو تیار ہیں۔( ن ) لیگی ٹکٹ ہولڈرز 8اگست کوالیکشن کمیشن کے دفتر کے باہر احتجاج کریں گے۔ان کا کہنا تھا کہ آزادامیدواروں کی منڈی لگی ہوئی ہے‘الیکشن کمیشن کی ناکامی پر8اگست کو احتجاج ہوگا‘ عمران خان کوجعلی مینڈیٹ دینےکی کوشش کی گئی۔ان کا کہنا تھا کہ اجلاس میں دھاندلی شدہ الیکشن کی مذمت کی گئی‘شہبازشریف نے دھاندلی کےخلاف وائٹ پیپرجلد تیار کرنے کا حکم دیا ہے۔

سابق وزیر اطلاعات کا کہنا تھا کہ الیکشن کمیشن کی الیکشن میں ناکامی کےخلاف احتجاج ہوگا‘ امیدواروں کو فارم 45 کے بجائے کچی پرچیاں دی گئیں۔انہوں نے کہا کہ( ن ) لیگ الیکشن دھاندلی کے تمام ثبوت سامنےلائےگی‘احتجاج میں ( ن ) لیگ کے تمام ٹکٹ ہولڈرزشریک ہوں گے‘ احتجاج کرناہماراآئینی اورقانونی حق ہے۔ان کا کہنا تھا کہ نوازشریف پرکسی قسم کی کرپشن ثابت نہیں ہوئی‘ عمران خان خودساختہ وزیراعظم بن بیٹھے ہیں‘ عمران خان نے پاکستان کے عوام کا ووٹ چوری کیا ہے۔

مریم اورنگزیب نے کہا کہ عمران خان نے کہا تھا کہ جتنے چاہییں حلقے کھول لیں، پھر سعدرفیق کو این اے 131 نہ کھولنے کا کیوں کہا جارہا ہے؟ ‘عمران خان کوکسی قسم کاخدشہ نہیں ہے، تو حلقے کیوں نہیں کھلواتے۔انھوں نے کہا کہ آزادامیدواروں کی منڈی لگی ہوئی ہے،چھانگا مانگا کی سیاست کو دوبارہ نہیں دہرانا، پہلے جو جھوٹا تھا، اب وہ ووٹ چورہوگیا ہے۔مریم اورنگزیب نے کہا کہ حکومت بننےکے بعد پارلیمنٹ کا مشترکہ اجلاس بلانے کا مطالبہ کیا جائے گا، پارلیمنٹ کےمشترکہ اجلاس میں وائٹ پیپرلایاجائےگا۔


ای پیپر