فلسطینیوں کو پرامن احتجاج کرنا چاہیے : امریکہ
06 اپریل 2018 (17:35)

غزدہ :اسرائیلی فوج کی فائرنگ سے 19 فلسطینیوں کی ہلاکت کے بعد امریکہ نے فلسطینیوں سے کہا ہے کہ وہ پرامن احتجاج کریں اور غزہ اور اسرائیل کی سرحد سے 500 میٹر دور رہیں۔


امریکہ کی جانب سے یہ بیان ایسے وقت آیا ہے جب فلسطینی نئے مظاہروں کے لیے تیار ہیں۔ امریکہ کی جانب سے یہ بیان امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے سفیر جیسن گرینبلیٹ نے دیا ہے۔بیان میں انھوں نے کہا ’ امریکہ مظاہرے کرنے والے رہنماؤں سے استدعا کرتا ہے کہ وہ سب کو صاف صاف بتا دیں کہ احتجاج پرامن ہو اور کسی قسم کے تشدد سے اجتناب کریں۔‘انھوں نے مزید کہا کہ ’مظاہرین غزہ اور اسرائیل کی سرحد کے قریب 500 میٹر کے بفر زون سے باہر رہیں اور کسی بھی صورت میں سرحد کے قریب نہ جائیں۔ ہم ان رہنماؤں اور مظاہرین کی مذمت کرتے ہیں جو مظاہرین بشمول بچوں کے کو سرحد کی قریب جانے کا کہتے ہیں یہ جانتے ہوئے کہ وہ زخمی یا ہلاک ہو سکتے ہیں۔‘اس سے قبل اسرائیل نے تنبیہہ کی ہے کہ فائر کرنے کے احکامات میں کوئی تبدیلی نہیں آئی ہے۔


اسرائیلی سکیورٹی فورسز کے مطابق سرحد پر پانچ مقامات پر 50 ہزار فلسطینی مظاہرین متوقع ہیں۔اسرائیل کا کہنا ہے کہ پانچ مقامات پر اسرائیلی فوجی اور سنائیپرز پوزیشن سنبھالیں گے۔دوسری جانب مظاہروں کے منتظمین کا کہنا ہے کہ وہ کم لوگوں پر مشتمل مظاہرین کے گروہ کو سرحد کے قریب جانے اور پتھراؤ یا ٹائر جلانے سے روکیں گے۔


ای پیپر