فوٹوبشکریہ فیس بک

آرمی پبلک سکول پشاور حملہ کیس، تحقیقات کیلئے سپریم کورٹ نے کمیشن قائم کر دیا
05 اکتوبر 2018 (11:56) 2018-10-05

اسلام آباد: سپریم کورٹ آف پاکستان نے آرمی پبلک سکول پشاور حملہ کیس میں واقعے کی تحقیقات کے لیے کمیشن قائم کر دیا۔

ازخود نوٹس کی سماعت میں چیف جسٹس ثاقب نثار نے متاثرہ ماؤں سے مکالمہ کرتے ہوئے کہا کہ اپنی بہنوں سے معافی چاہتا ہوں، زبانی حکم تو پہلے دیا تھا لیکن فائل پر آرڈر نہیں کر سکا۔ شرمندہ ہوں متاثرین کو دوبارہ عدالت آنا پڑا۔ چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے کہ آپ کے دکھ میں برابر کے شریک ہیں، انصاف کے تقاضے پورے کیے جائیں گے۔

عدالت نے حکم دیا کہ کمیشن ہائی کورٹ کے سینئر جج کی سربراہی میں کام کرے گا اور 6 ہفتوں میں رپورٹ دے گا۔ چیف جسٹس ثاقب نثار نے 16 اکتوبر کو آرمی پبلک سکول پشاور جانے کا بھی اعلان کیا۔ کہا اے پی ایس کلاس روم میں بیٹھ کر شہداء کے لئے فاتحہ خوانی کرینگے۔

میڈیا سے بات کرتے ہوئے شہید طالبعلم اسفند خان کی والدہ آبدیدہ ہوگئیں، کہتی ہیں ہمارے بچے گئے ہیں، کوئی سمجھوتہ نہیں کیا اور نہ کریں گے۔ شہید کی والدہ کا کہنا تھا کہ سپریم کورٹ سے ہماری امیدیں وابستہ ہیں۔


ای پیپر