رمضان المبارک کی آمد پر مہنگائی کا طوفان
05 May 2019 (16:35) 2019-05-05

لاہور:الیکشن سے پہلے غریب عوام کی خدمت کرنے کے سب دعوے آہستہ آہستہ خیالی باتیں ثابت ہو رہی ہے جب نئے پاکستان میں پہلے رمضان المبارک پر بجائے عوام کو ریلیف دینے کے قیمتیں انتہائی بڑھا دی گئیں ہے اور غریب عوام مہنگائی سے بلبلا اٹھے ہیں۔

ایک سروے کے مطابق اس وقت اشیائے خورد و نوش عوام کی پہنچ سے باہر ہو چکے ہیں۔ عوام کا سوال ہے کہ بجلی ٗ پٹرول اور گیس کی قیمتوں ہی کیا کم تھیں کہ اب عوام کی روزمرہ ضرورت کی چیزوں کی قیمتوں میں بھی اضافہ کر دیا گیا ہے۔

اس وقت قیمتیں بڑھ جانے کے بعد پیاز65روپے فی کلو،ادرک220اورٹماٹر70روپے فی کلومیں فروخت ہونے لگے،لیموں350روپے،بھنڈی120اورکدوکی قیمت90روپے فی کلوتک جاپہنچی،مرغی کاگوشت 240 روپے فی کلو میں فروخت ہو رہا ہے،سیب300روپے فی کلوجبکہ کیلا120روپے فی درجن تک پہنچ گیا،انار500روپے،آم200روپے فی کلوتک فروخت ہورہے ہیں،دال چنا110روپے،دال مسور115اورنیاچاول120روپے فی کلومیں فروخت ہو رہا ہے ۔


ای پیپر