Riaz Chaudhry, columns, Urdu, Nai Baat Newspaper, e-paper, Pakistan
05 مارچ 2021 (11:53) 2021-03-05

نریندر مودی کے دور میں آر ایس ایس کے فلسفے کے زیر اثر پاکستان کے خلاف دشمنی اور تخریب کاری اپنی آخری حدوں تک جا پہنچی ہے۔ مودی سرکار خطے میں عدم استحکام پیدا کرنے کے لئے کسی بڑی کارروائی پر تلی نظر آتی ہے۔ لائن آف کنٹرول پر بہت بڑے علاقے میں بھارت کی شدید اشتعال انگیزی بھی اس سلسلے میںکی کڑی ہے۔ 

 اس نازک صورت حال کا نوٹس لینا اور دنیا کو بھارت کے ناپاک ارادوں سے دوٹوک انداز میں آگاہ کرنا ضروری ہو گیا تھا لہٰذا وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی اور افواجِ پاکستان کے شعبہ تعلقات عامہ کے سربراہ میجر جنرل بابر افتخار نے پریس کانفرنس میں بھارتی دہشت گردی کی تفصیلات ٹھوس ثبوت و شواہد کے ساتھ پیش کرنے کا اہتمام کیا تاکہ عالمی برادری کو بھارت کے اْن امن دشمن عزائم سے خبردار کیا جا سکے جن کے تباہ کن نتائج پوری دنیا پر اثر انداز ہو سکتے ہیں۔  الطاف حسین گروپ، طالبان اور کالعدم بلوچ تنظیموں کو اسلحہ اور رقوم فراہم کی جا رہی ہیں۔ پاکستان میں داعش کو منظم کرنے کی کوشش بھی ہو رہی ہے نیز آزاد جموں و کشمیر، گلگت بلتستان، فاٹا اور بلوچستان میں قوم پرستی کو ہوا دی جارہی ہے۔ پریس کانفرنس میں دہشت گردوں اور اْن کے بھارتی معاونین کی وڈیو اور آڈیو کالز بھی سنوائی گئیں۔

 فارن پالیسی نامی ممتاز امریکی جریدہ بھی بین الاقوامی سطح پر پاکستان ہی نہیں دنیا کے متعدد ملکوں میں بھارت کی دہشت گردانہ سرگرمیوں کے بارے میں نہایت چشم کشا انکشافات کرچکا ہے۔ جریدے کی رپورٹ میں بھارت کو عالمی دہشت گرد ملکوں میں سرفہرست قرار دیا گیا ہے۔بھارت تمام تر دہشت گرد گروہوں سے روابط قائم کرکے پاکستان کے خلاف دہشت گردوں کا ایک مشترکہ اتحاد بنارہا ہے۔ان میں ’قوم پرست جماعتوں سے منسلک پاکستان مخالف گروہ بھی شامل ہیں۔  بھارت پاکستان کی سالمیت کو کمزور کرنے کا کوئی موقع کبھی ہاتھ سے نہیں جانے دیتا۔بھارت کی طرف سے ہمارے شمالی علاقہ جات میں اسلحہ اور رقوم فراہم کر کے دہشت گردوں کی حوصلہ افزائی کی جا رہی ہے اس کے علاوہ سرحدی علاقوں میں خصوصاً پشاور، فاٹا میں پاکستان مخالف تحریری مواد بھی پھیلایا جا رہا ہے۔کے پی کے کی سرحد افغانستان سے ملتی ہیں اور اس راستے سے بھارتی و امریکی اسلحہ کے پی کے میں پہنچایا جاتا ہے۔

پاکستان نے ملک میں دہشت گردی کی سرگرمیوں میں بھارت کے ملوث ہونے سے متعلق چشم کشا ثبوتوں پر مشتمل ڈوزیئر اقوام متحدہ کے انڈر سیکریٹری جنرل برائے انسداد دہشت گردی کے سپرد کردیا ہے جس پر اقوام متحدہ کے انسداد دہشت گردی کے سربراہ نے اس ڈوزیئر کا مطالعہ کرنے کا وعدہ کیا ہے جسے پاکستانی ایجنسیوں نے پاکستان میں دہشت گردی اور بغاوت کو فروغ دینے کے لیے ہندوستان کی منظم مہم کی مکمل تحقیقات کے بعد تیار کیا ہے۔

 ترجمان دفتر خارجہ زاہد حفیظ چوہدری کا کہنا ہے کہ پاکستان کے قانون نافذ کرنے والے ادارے بھارتی تخریب کاری کا جواب دینے کیلئے تیار ہیں۔ بھارت کی جانب سے اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل میں بیٹھنا اس کی انسانی حقوق کی خلاف وزریوں اور اقلیتوں کے حقوق کی خلاف ورزیوں کے تناظر میں مضحکہ خیز ہو گا۔ہم پُراعتماد ہیں کہ سلامتی کے دیگر مستقل اراکین بھارت کو غیر مستقل نشست پر نہیں بیٹھنے دیں گے۔ بھارت نے پاکستان میں خصوصی طور پر تربیت یافتہ دہشت گرد بھیجنے کا منصوبہ بنایا ہے جو مختلف شہروں میں اہم عمارات ، ہوائی اڈوں، مساجد اور دیگر مذہبی عبادت گاہوں کو نشانہ بناسکتے ہیں۔جنگی جنون اور خطے کے امن کو تباہ کرنے کے خواہش مند مودی نے اتنا کچھ ہوجانے کے بعد بھی پاکستان کو حملے کی دھمکی دی ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ پہلے حملے کی مشق تھی اب اصلی ہوگا۔  اس کے ساتھ ساتھ سوشل میڈیا پر بھارت نے پاکستان کے خلاف 6321 فیک آئی ڈیز بنائی ہیں جن کے ذریعے مذہبی نفرت پھیلانے ، صوبائی عصبیت پیدا کرنے اور حساس اداروں کو تنقید کا نشانہ بنانے اور جعلی ویڈیوز اپ لوڈ کرنے کا کام کیا جائے گا۔یہ بھی معلوم ہوا ہے کہ ان آئی ڈیز کو افغانستان، سائوتھ افریقہ، لندن اور بھارت سے آپریٹ کیا جائیگا۔اس کے ساتھ ساتھ جعلی مدارس اور دہشت گردی کے کیمپس کی ویڈیو بنا کر سوشل میڈیا پر ڈالی جائیںگی۔ اس خوفناک منصوبے کے لئے انتہا پسند ہندوؤں کو باقاعدہ تربیت دی جارہی ہے جنہوں نے مسلمانوں کی طرح داڑھیاں رکھی ہوئی ہیں اوران کو مسلمان ظاہر کر کے پاکستان بھیجا جائے گا جہاںان کی ایسی ویڈیوز بنائی جائیں گی کہ مسلمان دہشت گردی کے تربیتی کیمپوں کو چلا رہے ہیں۔ خیبرپختونخوا میں دہشت گردی کا مسئلہ بڑا سنگین ہے۔ پولیس قانون نافذ کرنے والے دیگر اداروں کے ساتھ مل کر اس کے خلاف برسر پیکار ہے۔اسی وجہ سے اب دہشت گردی میں کمی بھی واقع ہوگئی ہے۔  بیشتر دہشت گرد اپنے انجام کو پہنچ گئے ہیں۔ کچھ افواج پاکستان کے ہاتھوں اور کچھ پولیس کے ذریعے مارے گئے ۔بھارت کسی خوش فہمی میں نہ رہے۔ پاک افواج ملک و قوم کے تحفظ کی بھرپور صلاحیت رکھتی ہیںاور پوری پاکستانی قوم ملک کے دفاع کیلئے پاک افواج کے شانہ بشانہ کھڑی ہے۔

بھارت بلوچستان کے باغیوں کی ناصرف پیٹھ ٹھونک رہا ہے بلکہ انہیں مالی وسائل بھی مہیا کر رہا ہے۔ بھارتی سازشوں کا مرکز افغانستان کے صوبہ قندھار میں ہے اور اس کی بیشتر برانچیں اب افغانستان کے دوسرے صوبوں میں بھی میں کھل گئی ہیں۔ جہاں پاکستان سے اغوا کیے گئے بے روزگار پڑھے لکھے جوانوں کو معاشی ترغیبات سے اپنے ہی ملک کے خلاف بھڑکایا جاتا ہے۔ بلوچستان کے بے روزگار نوجوانوں کو دس دس ہزار روپے تنخواہ دے کر ملک دشمن سرگرمیوں کے لئے استعمال کیا جارہا ہے۔


ای پیپر