جمال خاشقجی کی لاش کے ٹکڑوں کو تین دن تک بھٹی میں ڈالا گیا
05 مارچ 2019 (19:54) 2019-03-05

انقرہ: ترکی میں سعودی قونصل خانے میں قتل ہونے والے صحافی جمال خاشقجی کے قتل کے حوالے سے نئے انکشافات نے ایک طوفان مچا دیا ہے۔ ہر طرف یہ سوال اٹھائے جا رہے ہیں کہ کسی بھی اختلاف کی صورت میں کیا کسی کو اس بے رحمی سے قتل کیا جا سکتا ہے۔ پہلے جمال کی لاش کے ٹکڑے کئے گئے اور بعد ازاں اسے بھٹی میں جلانے کا انکشاف ہوا ہے۔

قطری ٹی وی نے ایک رپورٹ جاری کی ہے جس کے مطابق ترکی میں سعودی قونصل جنرل کے گھر میں موجود بھٹی میں جمال کی لاش کے ٹکڑے کو پگھلایا گیا۔ یہ لاش کے ٹکڑے پلاسٹک کی تھیلیوں میں یہاں منتقل کئے گئے۔یہ بھٹی ایک ہزار ڈگری سینٹی گریڈ کی حرارت پیدا کرنے کیلئے کافی ہے جس میں دھات بھی پگھلائی جا سکتی ہے۔

قطری ٹی وی کے مطابق جمال کی لاش کے ٹکڑے کو بھٹی میں ڈالنے میں تین دن لگے۔ سعودی قونصل جنرل کے گھر کی دیواروں سے جب نیا رنگ اتارا گیا تو وہاں پر جمال خاشقجی کے خون کے دھبے بھی نظر آئے۔


ای پیپر