Source : Yahoo

ایون فیلڈ ریفرنس کا فیصلہ موخر کرنے کی درخواست پراہم پیش رفت
05 جولائی 2018 (20:10) 2018-07-05

لاہور:احتساب عدالت کے جج ارشد ملک نے ایون فیلڈ ریفرنس کا فیصلہ موخر کرنے کی درخواست پر سماعت کرنے سے معذرت کر لی۔ تفصیلات کے مطابق اسلام آباد کی احتساب عدالت نے شریف خاندان کے خلاف ایون فیلڈ ریفرنس کا فیصلہ محفوظ کرلیا ہے جسے سنانے کے لیے 6 جولائی کی تاریخ مقرر کی گئی ہے۔سابق وزیر اعظم نواز شریف نے ایون فیلڈ ریفرنس کا فیصلہ موخر کرنے کی درخواست دی تھی۔

تاہم اب اس متعلق خبر سامنے آ گئی ہے۔کہ احتساب عدالت کہ جج ارشد ملک نے ایون فیلڈ ریفرنس کا فیصلہ موخر کرنے کی درخواست پرسماعت کرنے سے معذرت کر لی ہے۔ان کا کہنا ہے کہ یہ کیس احتساب عدالت نمبر 1 کے جج محمد بشیر کی زیر سماعت ہے۔اور وہ آج رخصت پر ہیں۔درخواستیں 6جولائی کو احتساب عدالت کے جج محمد بشیر کے سامنے پیش کی جائیں گی۔جج ارشد ملک نے نواز شریف اور مریم نواز کی درخواستوں کو سماعت کے لیے مقرر کرنے کا حکم جاری کر دیا ہے۔

یاد رہے نوازشریف نے اپنے وکیل خواجہ حارث کے معاون وکیل ظافر خان کے توسط سے ایون فیلڈ ریفرنس کا فیصلہ مو¿خر کرنے کے لیے باضابطہ درخواست دائر کی تھی۔درخواست میں کہا گیاتھا کہ جب سنا کہ احتساب عدالت فیصلہ سنانے جارہی ہے تو پاکستان جانے کے لیے ڈاکٹرز سے مشورہ کیا، ڈاکٹرز نے کلثوم نواز کی طبعیت میں بہتری تک نہ جانے کا مشورہ دیا ہے۔درخواست میں یہ بھی موقف اپنایا گیا کہ مجبوری ہے وہ 6 جولائی کو عدالت میں پیش نہیں ہو سکتے۔جیسے ہی اہلیہ کی طبعیت سنبھل جائے گی تو وہ پاکستان آئیں گے۔اس لیے کچھ روز کے لیے ایون فیلڈ ریفرنس کے فیصلے کو موخر کیا جائے۔ شریف خاندان کے خلاف ایون فیلڈ ریفرنس کا فیصلہ بروز جمعہ کو سنایا جائے گا۔

سیاسی مبصرین کے مطابق اس فیصلے میں نواز شریف کو سزا ہو سکتی ہے۔ اور اگر وہ پاکستان نہ آئے تو ان کو وطن واپسی پر ائیرپورٹ سے ہی گرفتار کر لیا جائے گا۔جب کہ کچھ سیاسی مبصرین کا کہنا ہے کہ ممکن ہے ایون فیلڈ ریفرنس میںمریم نواز کو ریلیف مل جائے کیونکہ مریم نواز کا کیس نواز شریف کے کیس سے مختلف ہے۔سیاسی مبصرین کے مطابق ممکن ہے کہ نواز شریف کو ایون فیلڈ ریفرنس میں 14سال کی سزا ہو۔


ای پیپر