Tragedy, Mach, Chief Minister Balochistan, Jam Kamal Khan, Pakistan, tourism
05 جنوری 2021 (14:25) 2021-01-05

کوئٹہ: مچھ میں ہونے والے دل دہلا دینے والے واقعے کے بعد بھی وزیر اعلیٰ بلوچستان جام کمال خان دبئی میں موجود ہیں اور آئندہ 3 سے 4 روز تک واپس آنے کا کوئی امکان نہیں۔

تفصیلات کے مطابق وزیراعلیٰ بلوچستان گزشتہ 4 روز سے دبئی میں اپنی فیملی کے ساتھ موجود ہیں جہاں وہ سیر و تفریح کے لیے گئے ہیں۔ حیران کن بات یہ ہے کہ مچھ میں ہونے والے افسوسناک واقعے کی اطلاع ملنے کے باوجود وہ پاکستان نہیں آرہے بلکہ مزید تین سے چار دن دبئی میں قیام کریں گے۔

ادھر ہزارہ برادی کا سانحہ مچھ کے خلاف تیسرے روز بھی دھرنا جاری ہے، وفاقی وزیر داخلہ شیخ رشید کی یقین دہانی بھی انہیں دھرنا ختم کرنے پر آمادہ نہ کر سکی۔

خیال رہے کہ مظاہرین نے مطالبہ کیا ہے کہ جب تک وزیراعظم عمران خان خود آکر انصاف دلانے کی یقین دہانی نہیں کراتے اور بلوچستان حکومت مستعفی نہیں ہوتی وہ دھرنا ختم نہیں کریں گے۔ مظاہرین نے مطالبات کی منظوری تک میتوں کی تدفین نہ کرنے اور دھرنا جاری رکھنے کا اعلان کیا ہے۔

یاد رہے کہ شیخ رشید نے مظاہرین سے دھرنا ختم کرنے کی اپیل کرتے ہوئے متاثرین کو صوبائی حکومت کی طرف سے 15 لاکھ اور وفاقی حکومت کی طرف سے 10 لاکھ روپے دینے کا اعلان کیا تھا۔ انہوں نے ساتھ ہی یہ کہا تھا کہ صوبائی حکومت کے مستعفی ہونے کا مطالبہ نہیں مان سکتے۔ انہوں نے قاتلوں کو کیفر کردار تک پہنچانے کی یقین دہانی کروائی تھی۔

واضح رہے کہ مچھ میں دہشتگردوں نے ہزارہ برادری کے 11 افراد کو بے رحمی سے قتل کر دیا تھا۔

دوسری جانب اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل انتونیو گوتریس اور صدر جنرل اسمبلی ولکان بوزکیر نے پاکستان میں دہشت گرد حملے کی مذمت کرتے ہوئے کہا کہ مچھ میں کوئلے کی کان کے 11 بے گناہ کان کن افراد کی ہلاکت افسوسناک ہے۔


ای پیپر