نیب کاایمان…؟
05 جنوری 2021 (11:50) 2021-01-05

کچھ دن پہلے میرے موبائل پرایک میسج آیا۔۔یہ میسج شائدکہ آپ میں سے بھی بہت سوں کوآیاہوگااوراگرنہیں آیاتوپریشان نہ ہوں کسی دن بن بلائے یابتائے آہی جائے گا۔۔ویسے میں بتادیتاہوں کہ یہ میسج تھاکیا۔۔یاہے کیا۔۔؟ میسج ہے ۔۔نیب کاایمان۔۔کرپشن فری پاکستان۔۔ کرپشن سے پاک پاکستان یہ توہمارابھی بہت بڑا  ارمان ہے لیکن معذرت کے ساتھ نیب جیساایمان نہیں۔۔کیونکہ نیب نے کرپشن فری پاکستان کیلئے ایمان کا جومعیار۔۔قاعدہ اورضابطہ مقررکیاہے ۔۔اس ایمان سے ہم کیا۔۔؟نیب کے اپنے بھی پناہ مانگتے ہوں گے۔۔کرپشن فری پاکستان کے نام پر اس ملک میں دوڈھائی سال سے نیب کی چھتری تلے سیاسی انتقام کی جوآگ بھڑکائی اورشعلے پھیلائے جارہے ہیں اسے کسی بھی صورت کرپشن فری پاکستان کی طرف کوئی قدم اوراقدام قرارنہیں دیاجاسکتا۔۔ ہمارے بڑے کہاکرتے تھے کہ جب بھی کسی کااحتساب کرنا چاہو۔۔ توسب سے پہلے اپنادامن و ہاتھ صاف اور دوسرے کا گریبان پکڑنے سے پہلے ذرہ اپنے گریبان میں ایک بار  ضرور  جھانک لینا۔۔ کیونکہ گندے ہاتھوں سے کبھی صفائی نہیں ہوتی بلکہ گند مزید پھیلتا ہے۔۔ اور اپنا گریبان اگر تارتار اور دامن داغدار ہو تو پھر دوسرے کادامن اورگریبان پکڑنے کاکوئی فائدہ نہیں ہوتابلکہ الٹانقصان بلکہ بہت بڑانقصان ہوتا ہے۔۔ دوئم ایک بات یادرکھنا۔۔احتساب کے معاملے میں پھرکوئی اپنااپنااور دشمن پھردشمن نہیں رہتا۔۔ذات اورمفادکوقربان کرنے کے بعدہی احتساب کاعمل ایمانداری کے ساتھ انجام کوپہنچ سکتاہے۔۔پہلے اپنامحاسبہ اوراپنوں وبیگانوں میں کھینچی گئی تفریق کی لکیربھی تمہیںختم کرنا ہو گی۔۔کیونکہ احتساب کے معاملے میں پھراپنے اور بیگانے ایک لائن اورمقام پر آ جاتے ہیں۔۔ چور۔۔ ڈاکو اور لٹیرا چاہے اپنا ہو یا بیگانہ وہ پھر اپنا یا بیگانہ نہیں رہتابلکہ وہ آپ کے سامنے صرف ایک چور۔۔ ایک ڈاکو اور ایک لٹیرا بن کر رہ جاتا ہے۔۔ ایک منصف۔۔ایک محتسب اور نیب کا ایک ڈائریکٹر ہو کر اگر آپ اپنے وبیگانے میں تمیز ختم نہ کرسکیں توپھرآپ ایک نہیں ہزار بار احتساب احتساب کے نعرے لگائیں۔۔چلے کاٹیں۔۔عمل دہرائیں ۔۔آپ احتساب کے ساتھ انصاف نہیں کر سکیں گے۔۔ کرپشن فری پاکستان اگرنیب کا ایمان ہے تویہ اچھی بلکہ بہت ہی اچھی بات ہے۔۔لیکن انتہائی ادب واحترام کے ساتھ نیب کایہ جوایمان ہے اس پر ناصرف غیروں بلکہ کئی اپنوں کو بھی بہت سے خدشات اور تحفظات 

ہیں۔۔سچ تویہ ہے کہ کئی مہربان تونیب کے کرپشن کیخلاف حالیہ اقدامات۔۔ نعروں۔۔دعوئوں اوروعدوں کوایمان ہی نہیں سمجھتے بلکہ وہ تویہاں تک کہتے ہیں کہ یہ کچھ اگرکرپشن کیخلاف نیب کا ایمان ہے توایسے ایمان سے ہمارے باپ دادا کی بھی توبہ۔۔ مانا کہ نیب نے بڑے بڑے چوروں۔۔ ڈاکوئوں اورلٹیروں پرہاتھ ڈال کرقوم کی لوٹی ہوئی بہت دولت واپس کی ہوگی لیکن کرپشن فری پاکستان کیلئے نیب نے اس وقت جوایمان اپنایاہے وہ واقعی اس ملک میں کسی کاایمان نہیں ہوسکتا۔ہمیں کرپشن کے خلاف نیب کے اقدامات اور کارناموں کا انکار نہیں لیکن ملک کو کرپشن سے پاک کرنے کے لئے نیب نے ایمان کاجوپیمانہ مقرر کیاہے اس پراوروں کی طرح ہمیں بھی نہ صرف خدشات بلکہ کئی طرح کے تحفظات بھی ہیں۔۔نیب کاایمان تویہ ہوتاکہ ملک میں احتساب کی لاٹھی بیگانوں کے ساتھ اپنوں پربھی پڑتی۔۔مسلم لیگ ن۔۔پیپلزپارٹی اوردیگرحکومت مخالف سیاسی جماعتوں اورپارٹیوں سے تعلق رکھنے والے چور۔۔ڈاکواورلٹیروں کے ساتھ حکمران اتحادمیں شامل چوروں۔۔ڈاکوئوں اورلٹیروں کابھی برابرکااحتساب اورمحاسبہ ہوتامگریہاں تو دوڈھائی سال سے احتساب۔۔انصاف اور ایمان کامعاملہ ہی الٹ چل رہاہے۔۔حکومت کے سیاسی مخالفین کوتوچن چن کراحتساب کے نام پرذلیل ورسواضرورکیاگیالیکن ایمان کے ساتھ کسی اپنے پرہاتھ ڈالنے کی کوشش کبھی نہیں کی گئی۔۔آمدن سے زائداثاثوں کے نام پرہرسیاسی مخالف کو کٹہرے میں کھڑاکرنے کونیب نے جوایمان بنایاہے کیااس ایمان پر حکومتی وزیر۔۔  مشیر۔۔ ممبران قومی وصوبائی اسمبلی۔۔ سینیٹرز اور خود نیب کے ایماندار افسران و اہلکار پورا اتر رہے ہیں۔۔؟ آمدن سے زائد اثاثوں کے ایک نکتے اور نقطے پر دوسروں کے گھر۔۔ در اور گریبان تک پہنچنے والے نیب افسران اوراہلکاروں کے اپنے اثاثے کیاآمدن کے مطابق ہیں ۔۔؟ کرپشن فری پاکستان کے قیام کے لئے دوسروں کامحاسبہ کرنے والے وقت کے ان منصفوں نے کیااپنے آپ کواحتساب کے لئے کبھی پیش کیاہے۔۔؟ یہ جولوگ نیب کے ذریعے پورے ملک کے اندرلوٹ مار۔۔چوری چکاری اورکرپشن کے خاتمے کے لئے جہادکررہے ہیں کیااس جہاد کا آغاز انہوں نے اپنے گھر۔۔ در اور خاندان سے کیا ہے۔۔؟کیا چیئرمین سمیت نیب کے تمام افسران اورملازمین کی تقرریاں وبھرتیاں خالص میرٹ اورانصاف کے تمام ترتقاضوں کوپوراکرتے ہوئے کی گئی ہیں۔۔؟کیانیب میں شامل ایک کلاس فورتک کے تمام افسران اوراہلکاران کے اپنے ہاتھ اوردامن صاف ہیں ۔۔؟کیابحیثیت ایک منصف ومحتسب کے نیب کے نزدیک اپنے وبیگانے سب برابرہیں ۔۔؟کیانیب کوواقعی اللہ کے سواکسی کاکوئی خوف اورڈرنہیں ۔۔؟ان تمام سوالوں کے جوابات اگرہاں میں ہیں توپھرکرپشن فری پاکستان کے لئے جونیب کاایمان ہے وہی ہمارابھی ایمان ہے۔۔ نیب کی طرح ہم بھی چاہتے ہیں کہ اس ملک سے چوری چکاری ۔۔لوٹ ماراورکرپشن کاہمیشہ کے لئے خاتمہ ہو۔۔ہم بھی چاہتے ہیں کہ چوروں اور ڈاکوئوں کی وجہ سے یہاں فصل گل کوکبھی اندیشہ زوال نہ ہو۔۔ہماری بھی خواہش ہے کہ یہاں قوم کاپیسہ قوم پرلگے کسی کے پیٹ اورٹینٹ پرمفت میں خرچ نہ ہو۔۔لیکن اگران سوالات کے جوابات نفی میں ہیں توپھرہمیں کرپشن فری پاکستان کاسبق پڑھانے سے پہلے نیب والوں کواپنے اس ایمان کی ازسرنوتجدیدکرنی چاہئے۔۔ کیونکہ جب تک یہ ایمان کامل نہیں ہوگااس وقت تک کرپشن فری پاکستان کاخواب کبھی شرمندہ تعبیرنہیں ہو سکتا۔۔ نیب کس کو چور ثابت کرے ۔۔کس کو ایماندار۔۔ کس کوپکڑے اورکس کوچھوڑے۔۔ہمیں اس سے کوئی لینا دینا نہیں۔۔ کرپشن الزامات اگر نوازشریف پر ہوں۔۔ آصف علی زرداری۔۔ یا پھر مولانافضل الرحمن پر۔۔ گریبان ہر ایک کا پکڑنا چاہئے۔۔ بلکہ گریبان کے ساتھ کان بھی کھینچنے چاہئیں۔۔ لیکن غیروں کے گریبان میں ہاتھ ڈالتے ہوئے ایک بات ضروریادرکھنی چاہئے کہ احتساب کے معاملے میں اپنوں کودیکھنے والی آنکھ بھی بندنہیں ہونی چاہئے کیونکہ ایمان اورانصاف کاتقاضایہ ہے کہ جوچیزاپنے لئے پسندکرووہی دوسروںکیلئے بھی پسندکرو۔۔کرپشن فری پاکستان کے لئے صرف ایک آنکھ سے دیکھنااورصرف غیروں وبیگانوں کوپکڑپکڑکرچوروڈاکوثابت کرنایہ کوئی ایمان نہیں بلکہ بہت بڑی بے ایمانی ہے۔۔اس لئے نیب اگرملک کوکرپشن سے پاک کرنے میں واقعی سنجیدہ اورمخلص ہے تواسے سب سے پہلے اپنی اس خراب آنکھ کاعلاج کرکے اس میں بینائی بحال کرنا ہوگی جب تک اپنوں کودیکھنے والی یہ آنکھ ٹھیک نہیں ہوتی اس وقت تک ایک آنکھ سے ملک میں ہونے والے اس انوکھے اورعجیب احتساب کاکوئی فائدہ نہیں ہوگا۔۔کرپشن فری پاکستان کے لئے ضروری ہے کہ دونوں ہاتھوں کے ساتھ دونوں آنکھوں کابھی کھل کراستعمال کیاجائے تاکہ اپناہویابیگانہ۔۔نیب کے ایمان سے کوئی بھی چوراورڈاکو بچنے کی ہمت ۔۔جرأت اورکوشش نہ کرسکے ۔۔یہی اصل ایمان بھی ہے اورانصاف ووقت کاتقاضابھی۔۔


ای پیپر