PML-N, parliamentarians, resignations, Rana Sanaullah, PDM
05 دسمبر 2020 (12:04) 2020-12-05

لاہور: پاکستان مسلم لیگ ن کے رہنما رانا ثناء اللہ نے کہا کہ اُن کی پارٹی نے پی ڈی ایم کے اجلاس میں کوئی تجویز نہیں دی تھی، نواز شریف نے کہا تھا کہ لیگی پارلیمنٹیرین استعفوں کیلئے تیار ہیں۔

میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے قومی اسمبلی کے رہنما رانا ثناء اللہ نے کہا کہ ہم عمران نیازی کو نہیں چھوڑیں گے اور جیل میں ڈالیں گے۔ ہم جیل میں عمران خان کو ہر چیز فراہم کریں گے سوائے ایک چیز کے۔ وہ چیز کیا ہے رانا ثناء اللہ نے اُس کا نام نہیں بتایا۔

لیگی رہنما نے کہا کہ شرارتی وبا جہاں جلسہ ہو وہاں پہنچ جاتی ہے، 13 دسمبر کو حکومتی وبا کا علاج ہو جائے گا۔ مینار پاکستان بھر گا اور ملک بھر سے لوگ وہاں پہنچیں گے۔

رانا ثناء اللہ نے کہا انہوں نے اپنی ساری جائیداد کلیئر کی ، ان کے سارے اکاؤنٹ منجمد ہیں، یہ لوگ چھوٹی حرکتیں کرتے رہیں گے، میرے خلاف جعلی مقدمہ بنایا گیا، منشیات فروشوں کو طلب کرکے ڈرایا گیا۔

انہوں نے کہا کہ حکومت میرے خلاف بیانات لینے کی کوشش کرتی رہی لیکن کامیاب نہ ہو سکی۔ نیازی صاحب میرے خلاف کوئی خفیہ جائیداد یا اکاؤنٹ سامنے نہ لا سکے۔

لیگی رہنما نے حکومت پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ ایک کیس میں کہتے ہیں کہ میں نے منشیات سے اثاثے بنائے جبکہ دوسرے مقدمے میں کرپشن کے ذریعے اثاثے بنانے کا الزام ہے۔

دوسری جانب وزیر کالونیز و جیل خانہ جات پنجاب فیاض الحسن چوہان کا کہن اہے کہ لاہور جلسہ پی ڈی ایم کے ملک دشمن بیانیے کے تابوت میں آخری کیل ثابت ہوگا۔ زندہ دلان لاہور سے بھی مکس اچار پارٹی کو سوائے ذلالت کے کوئی امید نہیں رکھنی چاہیے۔ انہوں نے کہا کہ 2018 کے الیکشن سے پہلے ہی مینار پاکستان جلسے میں لاہور کی عوام نے عمران خان کو اپنا وزیر اعظم چن لیا تھا۔


ای پیپر