پاکستان کی بقاکیلئے آباد ی کنٹرول کرنا بہت ضروری ہے :چیف جسٹس
05 دسمبر 2018 (17:17) 2018-12-05

اسلام آباد :اسلام آباد میں بڑھتی آبادی پر سمپوزیم سے خطاب میں کرتے ہوئے چیف جسٹس ثاقب نثار نے کہا کہ آبادی ایسے ہی بڑھتی رہی تو تو 30سال بعد پاکستان کی آباد ی 45کروڑ ہو جائے گی ، پاکستان کی بقا کیلئے ہم نے آبادی کو کنٹرول کرنا ہے ،ان کا کہناتھا کہ بڑھتی آبادی کو کنڑول کرنے کا وقت آگیا ہے ، آباد ی کنٹرول کرنے کو بہت اہمیت دینا ہو گی ۔

چیف جسٹس نے کہا کہ بڑھتی ہوئی آباد ی کو کنٹرول کرنے سے متعلق سپریم کورٹ نے جو حصہ ڈالنا تھا وہ ڈال دیا ،تعلیم کی اہمیت پر توجہ دیتے ہوئے انہوں نے کہا جن قوموں نے اپنی بہتری کیلئے علم حاصل کیا وہ آج دیکھیں کہا پر ہیں ،وزیر اعظم کو مخاطب کر تے ہوئے چیف جسٹس نے کہا کہ گزشتہ 40سال سے ڈیم نہیں بنے ،اب وقت آگیا ہے کہ آپ تحقیقات کریں کہ گزشتہ 40سال سے ڈیم کیوں نہیں بنے ۔ہمارے ملک میں وسائل کم اور آباد ی زیادہ ہے ،بڑھتی ہوئی آباد ی کی وجہ سے وسائل کم ہو تے جا رہے ہیں ،تیزی سے بڑھتی آباد ی الارمنگ ہے ،ہمارے وسائل محدود اور ضروریات زیاد ہ ہیں ۔

پانی کی صورتحال واضح کرتے ہوئے انہوں نے کہا 2025تک پانی کی قلت کا بحران شدت اختیار کر جائے گا ،ہمارے ملک کو ڈیم کی اس وقت بہت ضرورت ہے ،40سال سے ڈیم نہ بننا ایک بڑا المیہ ہے ،آنے والے دنوں میں پانی کا مسئلہ مزید شدت اختیار کر جائے گا ،پانی زندگی ہے ،آج پاکستان میں کوئی واٹر مینجمنٹ نہیں ہے ،ہر سال7 لاکھ بلین گیلن پانی ہم زمین سے نکالتے ہیں۔

پاکستان میں تعمیرات کی بھرمار سے سبزہ زاروں میں کمی آئی ہے ،لاہور جیسے بڑے شہرتعمیرات سے بڑ ھ چکے ہیں ۔


ای پیپر