'یہ نہیں ہوسکتا کہ صرف بزدار کو پیسہ دیں، مراد علی شاہ کو نہ دیں'
کیپشن:   file photo
04 ستمبر 2020 (14:20) 2020-09-04

کراچی: چیئرمین پیپلز پارٹی بلاول بھٹو زرداری نے کہا ہے کہ امید ہے وزیراعظم پورے سندھ کیلئے ریلیف کا اعلان کریں گے۔

میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے بلاول نے کہا کہ اگست میں سندھ میں 100 سال بعد اتنی بارش ہوئی ہے۔ 2 سال بعد محسوس ہو رہا ہے کہ وفاقی حکومت کراچی میں وسائل فراہم کر رہی ہے۔ کل وزیراعلیٰ سندھ نے کراچی کیلئے 800 ارب روپے کے پراجیکٹ پر بات کی، سندھ حکومت 800 ارب خرچ کر رہی ہے، وفاق ڈبل خرچ کرے تو اچھی بات ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ آرمی چیف کراچی آئے یہ بہت اچھا پیغام ہے پورا ملک اُن کے ساتھ ہے۔ شہباز شریف کے شکر گزار ہیں جو مشکل وقت میں یہاں آئے۔ امید ہے نواز شریف کی صحت بہتر ہوتے ہی وہ واپس آئیں گے۔ ہم چارٹر آف ڈیمو کریسی کو مزید فعال بنانا چاہتے ہیں۔

بلاول نے کہا کہ صرف کراچی کے 3 نالوں کی صفائی سے مسائل حل نہیں ہوں گے۔ جن کا کہنا ہے سندھ کو پیسہ نہیں دیں گے، پیسہ ان کے باپ کا نہیں عوام کا ہے۔ سندھ کو پیسہ نہ دینے کی باتیں کرکے وفاق کو نقصان پہنچتا ہے۔ یہ بیان وفاقی حکومت کے وزرا کی جانب سے آرہا ہے کہ سندھ کو پیسہ نہیں دیں گے۔ یہ نہیں ہوسکتا کہ صرف بزدار کو پیسہ دیں، مراد علی شاہ کو نہ دیں۔

انہوں نے کہا کہ کراچی کے ایڈمنسٹریٹر کا اعلان جلد کریں گے، 2 سال ہوگئے پنجاب کے لوکل باڈیز نظام کو عمران خان نے ختم کر دیا۔ خیبرپختونخوا میں بھی عمران خان نے لوکل باڈیز نظام ختم کر دیا۔ صرف سندھ حکومت میں اتنی برداشت ہے جو ختم نہیں کیا، جہاں تک ایڈمنسٹریٹر کی بات ہے تو یہ سندھ حکومت کا فیصلہ ہے۔ ایڈمنسٹریٹر کا اختیار وزیراعلیٰ سندھ، ان کی حکومت کے پاس ہے۔ وزیراعلیٰ سندھ ایک غیر جانبدار ایڈمنسٹریٹر لے کر آئیں گے۔

سننے میں آیا ہے کراچی کیلئے بجلی کی قیمت میں اضافہ کیا گیا ہے۔ امید ہے کراچی کیلئے بجلی کی قیمتوں میں اضافے کا فیصلہ واپس ہوگا اور عمران خان نے جو گھروں کا وعدہ کیا ہے تو ان کی پہلی ترجیح یہاں ہونی چاہئے۔


ای پیپر