Source : Yahoo

تحریک انصاف کے رہنما عارف علی 13ویں صدر پاکستان منتخب،نتائج کی تفصیلی خبر
04 ستمبر 2018 (17:07) 2018-09-04

اسلام آباد : پاکستان تحریک انصاف کے رہنما عارف علوی پاکستان کے 13 ویں صدر منتخب ہو گئے ہیں۔قومی اسمبلی میں عارف علوی کو 212 ووٹ ملے ،مولانا فضل الرحمان کو 131 اور اعتزاز احسن کو 81 ووٹ ملے۔سندھ اسمبلی سے اعتزاز احسن کو 100 ، عارف علوی کو 56 ، مولانا فضل الرحمان کو 1 جبکہ دو ووٹ ضائع ہوئے۔بلوچستان اسمبلی میں مجموعی طور پر 65 میں سے 60 اراکین نے ووٹ کاسٹ کیے، جس میں سے 45 ووٹ عارف علوی، مولانا فضل الرحمان کو 15 ووٹ، اعتزاز احسن کو کوئی بھی ووٹ نہیں ملاہے۔

مولانا فضل الرحمٰن دوسرے اور اعتزاز احسن تیسرے نمبر پر ہیں۔صدارتی الیکشن کےلئے 5پولنگ اسٹیشن قائم کئے گئے ،قومی اسمبلی اور سینیٹ میں ایک اور چاروں صوبائی اسمبلیاں بھی پولنگ اسٹیشن قرار پائیں تھیں۔

سندھ اسمبلی نتائج
سندھ اسمبلی میں 163 میں سے 158 ارکان نے ووٹ ڈالے ،جن میں سے 2مسترد ہوئے ،پیپلز پارٹی کے اعتزاز احسن نے 100 اور تحریک انصاف کے عارف علوی نے 56 ووٹ لئے جبکہ مولانا فضل الرحمٰن سے سندھ اسمبلی کو کوئی ووٹ نہیں ملا۔

بلوچستان اسمبلی نتائج
بلوچستان اسمبلی کے 61 میں سے 60اراکین نے ووٹ کاسٹ کئے ،یہاں سے عارف علوی نے 45 اور مولانا فضل الرحمٰن نے 15ووٹ لئے ہیں جبکہ اعتزاز احسن کوئی ووٹ نہ لے سکے۔

کے پی کے اسمبلی نتائج
خیبرپختونخوا اسمبلی میں 112 میں سے 111 ارکان نے ووٹ کاسٹ ہوئے ، عارف علوی نے 78،فضل الرحمٰن نے 26 اور اعتزاز احسن نے 6ووٹ حاصل کئے ہیں۔

پنجاب اسمبلی نتائج
پنجاب اسمبلی میں پنجاب اسمبلی میں 354 میں سے 351 ارکان نے ووٹ کاسٹ کیا،جن میں سے 18ووٹ مسترد ہوئے.

سندھ اسمبلی میں 163 میں سے158 ووٹ کاسٹ ہوئے ، پیپلزپارٹی کے نادرمگسی اورمرادعلی شاہ سینئرنے ووٹ کاسٹ نہیں کیاجبکہ تحریک لبیک کے ارکان نے ووٹنگ کاعمل کا بائیکاٹ کیا۔پنجاب اسمبلی میں 354 میں 351 ووٹ کاسٹ ہوئے، علی عباس،ارشد جاوید، بسمہ ریاض نے ووٹ کاسٹ نہیں کیا ،بلوچستان اسمبلی کے 61 میں سے 60 ارکان نے ووٹ کاسٹ کئے،ن لیگ کے رکن اسمبلی نواب ثنا اللہ زہری نے ووٹ کاسٹ نہیں کیا۔یبرپختونخوااسمبلی میں 112میں سے 111ارکان نے ووٹ کاسٹ کئے،آزادرکن امجدآفریدی ووٹ کاسٹ کرنے نہیں آئے۔

پاکستان تحریک انصاف کی جانب سے صدار تی امیدوار عارف علوی، پیپلز پارٹی کے اعتزاز احسن اور اپوزیشن کے مولانا فضل الرحمان تھے,واضح رہے کہ آئین کے مطابق صدر پاکستان مسلح افواج کا سپریم کمانڈر بھی ہوتاہے۔صدارتی الیکشن میں اپوزیشن متفق امیدوار نہ لاسکی ، کی بدولت پی ٹی آئی کے عارف علوی کا راستہ پہلے ہی ہموار ہوگیا تھا ،جس کا ملبہ ن لیگ نے پیپلز پارٹی پر ڈالا اور اس پر پی ٹی آئی کی معاونت کا الزام بھی عائد کیا۔


ای پیپر