پی سی بی نے بچے کی پیدائش پر کھلاڑیوں کو تنخواہ کیساتھ چھٹی دینے کی پالیسی جاری کر دی
سورس:   فوٹو: بشکریہ ٹوئٹر
04 May 2021 (20:56) 2021-05-04

لاہور: پاکستان کرکٹ بورڈ (پی سی بی) نے بچے کی پیدائش پر کھلاڑیوں کو تنخواہ کیساتھ چھٹی دینے کی پالیسی جاری کر دی ہے جس کا اطلاق ویمنز اور مینز دونوں کرکٹرز پر ہو گا۔ 

تفصیلات کے مطابق پیشہ ور کھلاڑیوں کیلئے جاری کردہ اس پالیسی کے تحت مینز اور ویمنز کرکٹرز حمل کے دوران اور بچے کی پیدائش کے وقت اس پالیسی سے مستفید ہوسکیں گی۔ خواتین کرکٹرز اپنی زچگی کی چھٹی کے شروع ہونے سے لے کر بچے کی پیدائش تک نان پلیئنگ رول اختیارکرسکیں گی اور اس کیساتھ ہی وہ 12 ماہ کی چھٹی اور کنٹریکٹ کی معیاد میں ایک سالہ توسیع کی حق دار بھی ہوں گی۔

زچگی کی چھٹی کے اختتام پر مذکورہ ویمن کرکٹر کو دوبارہ کرکٹ کی سرگرمیوں میں شامل کیا جائے گا جبکہ پوسٹ چائلڈ ری ہیب پروگرام کے سلسلے میں بھی انہیں مناسب طبی معاونت فراہم کی جائے گی۔ اسی طرح اگر کسی خاتون کرکٹر کو کرکٹ کی کسی سرگرمی کے سلسلے میں سفر کرنا پڑتا ہے تو اسے اپنے نوزائیدہ بچے کی دیکھ بھال کیلئے من پسند فرد کے ساتھ سفر کرنے کی اجازت ہو گی، اس سلسلے میں تمام اخراجات پی سی بی اور مذکورہ خاتون کرکٹر برابر تقسیم کریں گے۔

وہ مینز کرکٹرجو کسی بچے کے والد بنتے ہیں تو وہ بھی مکمل تنخواہ کے ساتھ 30 دن تک چھٹی لینے کے حق دار ہوں گے تاہم انہیں یہ چھٹی اپنے بچے کی پیدائش کے 56 روز کے اندر حاصل کرنی ہوگی۔

پاکستان کرکٹ بورڈ (پی سی بی) کے چیف ایگزیکٹو آفیسر (سی ای او) وسیم خان کا کہنا ہے کہ ہر موقع پر اپنے کرکٹرز کا خیال رکھنا پی سی بی کا فرض ہے، لہٰذا مناسب ہے کہ ہمارے پاس اپنے کھلاڑیوں کیلئے والدین سے متعلق ایک دوستانہ پالیسی موجود ہو تاکہ ہمارے کھلاڑیوں کو زندگی کے اہم مرحلے میں مکمل معاونت حاصل ہو اور اس دوران وہ اپنے کیریئر کے حوالے سے بے فکر رہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ ہماری خواتین کھلاڑیوں کے لئے اس پالیسی کا موجود ہونا اور بھی اہم تھا، خواتین کسی بھی معاشرے کی ترقی میں اہم کردار ادا کرتی ہیں اور ہماری خواتین کرکٹرز نے تو عالمی سطح پر ہمارے لئے بہت سے اعزاز حاصل کئے ہیں، اب جبکہ ہمارے پاس زچگی کی چھٹی کی پالیسی موجود ہے ، امید ہے کہ ماضی کی نسبت خواتین زیادہ تعداد میں اس کھیل کی طرف راغب ہوں گی کیونکہ اس پالیسی کے اجراءسے انہیں اپنی زندگی میں توازن برقرار رکھنے میں مدد ملے گی۔

(بشکریہ: نیو نیوز)


ای پیپر