Collective efforts are needed to eradicate Islamophobia, says PM Imran Khan
کیپشن:   فائل فوٹو
04 May 2021 (11:40) 2021-05-04

اسلام آباد: وزیراعظم عمران خان نے تمام اسلامی ممالک پر زور دیا ہے کہ ہم سب کو مل جل کر اسلاموفوبیا کے خاتمے کیلئے اجتماعی کوششیں کرنے کی ضرورت ہے۔

وزیراعظم نے یہ بات اسلامی تعاون تنظیم (او آئی سئ) کے رکن ملکوں کے سفیروں کیساتھ ملاقات کے موقع پر کہی۔ انہوں نے معزز مہمانوں کو اسلاموفوبیا کے خاتمے کیلئے عالمی سطح پر پاکستان کی کاوشوں سے آگاہ کیا۔

عمران خان کا او آئی سی ممالک کے سفیروں سے گفتگو میں کہنا تھا کہ مغربی ملکوں میں اسلاموفوبیا میں خطرناک حد تک اضافہ ہوتا جا رہا ہے۔ پاکستان بین المذاہب ہم آہنگی کے لئے کوششیں کر رہا ہے کیونکہ اسلاموفوبیا سے بین المذاہب نفرت کو ہوا ملتی ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ دہشت گردی اور انتہا پسندی کا کوئی مذہب نہیں ہوتا۔ پاکستان دنیا میں برداشت کے فروغ کیلئے عالمی برادری سے تعاون کیلئے پرعزم ہے۔ تمام مذاہب کے افراد کی دل آزاری روکنے کیلئے قانونی اقدامات کی مکمل حمایت کرتے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ اظہار رائے کی آزادی کی آڑ میں توہین رسالت ﷺ سے ڈیڑھ ارب مسلمانوں کی دل آزاری ہوتی ہے۔ شدت پسندی کو اسلام سے جوڑنے سے عالمی سطح پر مسلمان متاثر ہوتے ہیں۔ انہوں نے زور دیا کہ او آئی سی اس حوالے سے عالمی سطح پر آگاہی پیدا کرنے میں کردار ادا کرے۔

وزیر اعظم کا کہنا تھا کہ ہم تمام ملکوں کے درمیان تعاون کے لیے پرعزم ہیں اور چاہتے ہیں کہ تمام ممالک کے درمیان امن اور اقتدار کے قیام کیلئے بات چیت ہو۔


ای پیپر