دہشت گردی کو اسلام سے جوڑنا مسلمانوں کےساتھ بڑی زیادتی ہے،وزیراعظم عمران خان
04 مارچ 2021 (18:05) 2021-03-04

اسلام آباد:ترک  صدر کی زیر صدارت اقتصادی تعاون تنظیم کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے وزیر اعظم عمران خان کا کہنا تھا سربراہ اجلاس کا افتتاح میرے لئے باعث فخر ہے،سربراہ اجلاس کا مقصد علاقائی اقتصادی ترقی کے حوالےسے لائحہ عمل پر غور ہے،پائیدار ترقی کے حصول کیلئے علاقائی تعاون ناگزیرہو چکا ہے ،افغان امن عمل خطے کو پائیدار ترقی کی طرف لے جانے میں معاون ہوگا۔

وزیراعظم عمران خان نے اقتصادی تعاون تنظیم کے ورچوئل اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا دنیا بھر میں کورونا کی وجہ سے  معیشت کو بے پناہ نقصان پہنچا، کورونا وبا کی وجہ سے معاشی و سماجی مضمرات کا مکمل تخمینہ لگانا ابھی باقی ہے،پاکستانی عوام کو وبا سے بچاؤ کےساتھ انہیں بھوک سے بھی بچایا،پاکستان نے معاشی مشکلات کے باوجود ہماری حکومت نے غیر معمولی اقدامات کئے،احساس پروگرام کے تحت عوام کو نقد رقوم فراہم کی گئیں۔

وزیر اعظم کا کہنا تھا پاکستان میں کورونا ویکسین کی فراہمی شروع کردی گئی ہے، کوروناسےبچاؤکیلئےعالمی سطح پرویکسین کی مساویانہ فراہمی ضروری ہے،امیر ممالک نے کورونا سے بچاؤ کیلئے وسائل کا استعمال کیا،مقبوضہ وادی میں کورونا وبا کی آڑ میں لوگوں کو دیوار سے لگایا گیا،دہشت گردی کو اسلام سے جوڑنا مسلمانوں کےساتھ بڑی زیادتی ہے،اسلاموفوبیا کے تدارک کیلئے پاکستان اور ترکی مل کر کاوشیں کر رہے ہیں،پائیدار ترقی کے حصول کیلئے علاقائی تعاون ناگزیر ہے۔

وزیر اعظم کا کہنا تھا افغان امن عمل خطے کو پائیدار ترقی کی طرف لے جانے میں معاون ہوگا،کوروناجیسےچیلنجزکامقابلہ کرنےکیلئےصحت کے شعبےکومزیدتقویت دینےکی ضرورت ہے،سی پیک کےذریعےافغانستان سمیت مشرق وسطیٰ تک رسائی اہمیت کی حامل ہے،خطےمیں خوشحالی کیلئےتجارتی سرگرمیوں کافروغ وقت کاتقاضاہے۔


ای پیپر