فوٹو/ اسکرین گریب نیو نیوز

راناثناء اللہ کو 3 ہفتے تک مانیٹر کرنے کے بعد گرفتار کیا: شہریار آفریدی
04 جولائی 2019 (16:03) 2019-07-04

اسلام آباد: وزیر مملکت برائے انسداد منشیات شہریار آفریدی نے کہا ہے کہ رانا ثناءاللہ کی گاڑی اور نقل و حرکت کو 3 ہفتے تک مانیٹر کیا گیا۔ طاقتور لوگوں کی پشت پناہی کی وجہ سے منشیات کا کاروبار چل رہا ہے۔ منشیات کی وجہ سے پاکستان کا امیج خراب ہوا ہے۔

شہریار آفریدی کی ڈی جی اے این ایف کے ساتھ پریس کانفرنس، کہا رانا ثناء اللہ کب سے منشیات کے کاروبار میں ملوث ہیں؟ عدالت میں ثابت کریں گے۔ رکن اسمبلی ہونے کا مطلب قانون سے بالاتر ہونا نہیں۔

انہوں نے مزید کہا کہ لیگی رہنما کی گاڑی کی تین ہفتے تک نگرانی کی گئی۔ پہلے 3 بار نشاندہی ہوئی لیکن خواتین ساتھ ہونے کی وجہ سے نہیں روکا گیا۔ جتنے سوال اٹھ رہے ہیں، سب کا ثبوت کے ساتھ عدالت میں جواب دیں گے۔

1200 منشیات فروش گرفتار کئے گئے، ان کیخلاف کسی نے آواز نہیں اٹھائی۔ اس وقت رانا ثناءاللہ کیلئے آواز اٹھانے والے کہاں تھے۔

دوسری جانب رہنما مسلم لیگ (ن) خواجہ آصف نے کہا کہ رانا ثناءاللہ کو دوائی اور صاف پانی سے محروم کردیا گیا۔ رانا ثناءاللہ کیخلاف الزامات پر انتہائی افسوس ہے۔ جو خود این آر او پر بیٹھے ہیں وہ کسی کو کیا این آر او دیں گے۔


ای پیپر