بھارت میں نیچ ذات کے ساتھ بدترین غیر انسانی سلوک
04 جولائی 2018 (11:38) 2018-07-04

میرٹھ:بھارتی ریاست میرٹھ کے بلند شہر میں 44سالہ دلت کو اپنا ہی تھوک چاٹنے پر مجبور کر دیا گیا، دلت لڑکے کو دوسرے خاندان میں شادی کرنے پر خاندان کی خواتین سے بے حرمتی کی دھمکیاں ملنے لگیں۔


تفصیلات کے مطابق بھارتی ریاست میرٹھ کے بلند شہر کے سونڈا حبیب پورگاں میں مقامی پنچایت نے 44سالہ ایک دلت کو اس وقت اپنا ہی تھوک چاٹنے پر مجبورکردیا جب اسکے بیٹے نے ایک دوسری برادری کی لڑکی سے شادی کی۔ سری کرشنا نے پولیس میں رپورٹ درج کرائی کہ اسے یہ بھی دھمکی دی گئی کہ اس کے خاندان کی خواتین کیساتھ زیادتی کی جائیگی۔ اس نے کہا کہ ہمیں دھمکی دی گئی ہے کہ ہمارا خاندان دوبارہ گاں میں نہ آئے۔ میرا بیٹا اور بہو نے روپوشی اختیار کرلی ہے۔


اسکا کہناہے کہ شروع میں پولیس نے ایف آئی آر درج کرنے سے انکار کردیا تھا۔پولیس نے بعد میں ایف آئی آر درج کرلی اور صرف 5ملزموں کے نام ایف آئی آر میں درج کئے گئے۔ ادھر بلند شہر کے ایس ایس پی نے کہا ہے کہ تھانے میں ایف آئی آر فوری طور پر درج کی گئی تھی۔ اب تک کسی کی گرفتاری عمل میں نہیں آئی۔


ای پیپر