Osama Satti,murder,case,police,arrest,justice,islamabad
04 جنوری 2021 (10:02) 2021-01-04

اسلام آباد :پولیس کی فائرنگ سے جاں بحق ہونے والے اسامہ ستی کے والد نے کہا ہے کہ ان کے بیٹے کے قتل کے کیس پر پیش رفت ہو رہی ہے لیکن انہیں اس وقت سکون ملے گا جب قاتلوں کیخلاف کارروائی کی  جائے گی۔

ایک ٹی وی پروگرام میں  گفتگو کرتے ہوئے مقتول اسامہ ستی کے والد ندیم ستی نے کہا کہ طفل تسلیوں سے ہم مطمئن ہونے والے نہیں ہیں۔بیٹے کے قتل کی ایف آئی آر کاٹی جا چکی ہے ٗ وزرا انصاف کی یقین دہانی کروا رہے ہیں ٗ جوڈیشل انکوائری کا مطالبہ مان لیا گیا ہے مگر ہم اس وقت مطمئن ہوں گے جب کارروائی ہو گی۔

ندیم ستی نے کہا کہ میرے بیٹے کا بہیمانہ قتل کیا گیا ہے ٗ ہمارا گھرانہ اجاڑ دیا گیا ہے اور ملزمان کو بچانے کیلئے تمام ہتھکنڈے بروئے کار لائے جا رہے ہیں لیکن ہم انصاف لے کر رہیں گے۔

انہوں نے کہا کہ میرے بیٹے کے قتل کے بارے میں کہا گیا کہ اس پر 2018 میں کیس درج ہوا تھا۔ جبکہ وہ کیس اسامہ ندیم کیخلاف تھا تو اس بارے میں پہلے دیکھا جانا چاہیے تھا ۔ جب پولیس پر بات آئی تو یہ کیس چھیڑا گیا ۔ پھر پولیس کی طرف سے کہا گیا کہ کوئی کیس نہیں تھا۔

یاد رہے کہ 21 سالہ نوجوان اسامہ ستی کو اسلام آباد پولیس کی طرف سے فائرنگ کر کے قتل کر دیا گیا ہے جس کے بعد ملزمان کی گرفتاری عمل میں آچکی ہے اور انہیں تین دن کیلئے ریمانڈ پر پولیس کے حوالے کر د یا گیا ہے۔


ای پیپر