ورچوئل ٹریننگ سنٹر کے قیام کیلئے این ایچ اے اور ٹوٹل پارکو پاکستان کے درمیان یادداشتی معاہدہ
سورس:   فائل فوٹو
04 فروری 2021 (17:23) 2021-02-04

لاہور: روڈ سیفٹی کے پیغامات کو جدید اور موثر طریقے سے عوام تک پہنچانے کے لئے ورچوئل ٹریننگ سنٹر قائم کیا جائے گا۔ موٹروے پولیس ٹریننگ کالج  شیخوپورہ میں نیشنل ہائی ویز اینڈ موٹروے پولیس اور ٹوٹل پارکو پاکستان کے درمیان ایک یادداشت کا معاہدہ طے پایا۔ آئی جی نیشنل ہائی ویز اینڈ موٹروے پولیس ڈاکٹر سید کلیم امام کی موجودگی میں معاہدے پر موٹروے پولیس کی طرف سے کمانڈنٹ ٹریننگ کالج ڈی آئی جی محبوب اسلم جبکہ ٹوٹل پارکو پاکستان کی طرف سے سی ای او ٹوٹل پارکو محمت سیلیپوگلو نے دستخط کئے۔

طے پانے والے یادداشت کے معاہدے کی رُو سے ٹوٹل پارکو موٹروے پولیس کے ساتھ مل کر روڈ سیفٹی پر تربیتی وڈیوز بنائے گی جن میں موٹرسائیکل سواروں کی سیفٹی، دورانِ سفر نیند کے آنے، ڈرائیونگ سے توجہ ہٹانے والے عوامل، محفوظ فاصلے، خراب موسم میں ڈرائیونگ، بلاینڈ سپوٹس، محتاط ڈرائیونگ اور روڈ سیفٹی کے دیگر اہم اُصولوں پر خصوصی توجہ دی جائے گی۔ ان وڈیوز کو عام عوام کے علاوہ مختلف ایسے نجی اداروں کو بھجوانے اور وہاں پر موجود ڈرائیورز کی تربیت کے لئے استمعال میں لایا جائے گا۔

معاہدے کے تحت بچوں کیلئے بھی روڈ سیفٹی پر مبنی مختلف وڈیو گیمز بنائی جائیں گی تاکہ مستقبل کے ان ڈرائیورز کو کھیل، کھیل میں روڈ سیفٹی کے اُصولوں سے آگاہ کیا جائے۔  معاہدے کے تحت  ٹوٹل پارکو پاکستان موٹروے پولیس کے ساتھ مل کر عوام میں روڈ سیفٹی کے شعور کو اُجاگر کرنے کے لئے مختلف روڈ سیفٹی سیمینارز، واکس، بریفنگ سیشنز اور دیگر تقریبات کا انعقاد بھی کرے گی۔

اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے آئی جی نیشنل ہائی ویز اینڈ موٹروے پولیس ڈاکٹر سید کلیم امام نے کہا کہ روڈ سیفٹی پر کام کرنا اس ادارے کا بُنیادی مقصد ہے اور وہ اسے انسانیت کی بہترین خدمت تصور کرتے ہیں۔ ٹوٹل پارکو جیسے اداروں کے تعاون سے ہی ہم اپنے عوامی خدمت کے معیار مزید بُلند کر سکتے ہیں۔

آئی جی موٹروے نے کالج میں ترقیاتی کاموں کے ساتھ ساتھ روڈ سیفٹی پر اہم کام سر انجام دینے پر کمانڈنٹ ٹریننگ کالج ڈی آئی جی محبوب اسلم کی تعریف کی ۔سی ای او ٹوٹل پارکو مسٹر محمت سیلیپوگلو نے اپنے خطاب میں موٹروے پولیس کی روڈ سیفٹی کے حوالے سے کی جانے والی کاوشوں کو سراہا۔ تقریب کے اختتام پر موٹروے پولیس اور ٹوٹل پارکو کی جانب سے یادگاری شیلڈز کا تبادلہ بھی کیا گیا۔  


ای پیپر