Opposition leader,akram durrani,Pakhtunkhwa,PTI,corruption,global epidemic
04 دسمبر 2020 (18:57) 2020-12-04

پشاور:خیبر پختونخوا اسمبلی میں قائد حزب اختلاف اکرم خان درانی نے پی ٹی آئی کی حکومت پر الزام لگایا ہے کہ عالمی وبا کیلئے دوسرے ممالک کی طرف سے بھیجے  جانے والے فنڈ میں بڑے پیمانے پر کرپشن کی گئی ہے 

پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے اکرم درانی نے کہا کہ آج میں عالمی وبا فنڈ  میں کرپشن کے ثبوت لایا ہوں، میں نے 15 آئٹمز میں کرپشن کی بات کی، مجموعی طور پر 50 آئٹمز میں کرپشن ہوئی ہے۔عالمی وبا کے دوران قواعد و ضوابط کے خلاف ادویات خریداری گئیں، 49 کروڑ روپے بینکس میں منافع کے لیے رکھے گئے تھے، بغیر ٹینڈر کے سرجیکل دستانوں کی خریداری ہوئی، شوکت خانم ٹیم پر ہوٹل میں ایک کروڑ 58 لاکھ روپے خرچ کیے گئے۔

جے یو آئی ف کے رہنما اکرم خان درانی نے کہا کہ پی ٹی آئی کا کرپشن فری پاکستان کا نعرہ تھا، آج بھی پی ٹی آئی والے قوم کو بتا رہے ہیں کہ پچھلے ادوار میں کرپشن ہوئی تھی۔ من پسند افراد کو ٹھیکے دیے گئے، 6 کروڑ، 55 لاکھ روپے استعمال ہی نہیں کیے گئے، ڈیڑھ کروڑ روپے کے مہنگے ماسک خریدے گئے، ایک کورونا ٹمپریچر آلہ 2227 روپے کا ہے، حکومت نے 26 ہزار میں خریدا ۔

اکرم درانی نے کہاکہ آڈٹ رپورٹ کے مطابق من پسند افراد کو ٹھیکے دیے گئے، 6 کروڑ، 55 لاکھ روپے استعمال ہی نہیں کیے گئے، ڈیڑھ کروڑ روپے کے مہنگے ماسک خریدے گئے، ایک کورونا ٹمپریچر آلہ 2227 روپے کا ہے، حکومت نے 26 ہزار میں خریدا۔حکومت جھوٹ بولنے میں مہارت رکھتی ہے، صحافیوں کو بے روزگار کیا گیا، چینلز پر پابندیاں مارشل لاء  سے بڑھ کر لگائی گئیں۔

انہوں نے مزید کہا کہ مریضوں کو اسپتالوں میں داخل نہیں کیا جا رہا، میرے بیٹے کو بھی داخل نہیں کیا گیا، ایک بچی کو جلایا گیا ایک ماہ گزر گیا، مگراس کی تحقیقات میں کوئی پیش رفت نہیں ہوئی۔اکرم درانی نے کہا کہ وزیرِاعلیٰ کمزور اور عمران خان کے کزن کے سامنے بے بس ہیں، صوبائی مشیر اجمل وزیر کی کرپشن پر خاموشی اختیار کی گئی۔


ای پیپر