نیویارک میں بل بورڈز پر بھارتی مظالم کی تصاویر آویزاں
04 اگست 2020 (22:39) 2020-08-04

نیو یارک:جنت نظیر وادی کشمیر پر گزشتہ سال 5 اگست 2019 کو بھارت نے آرٹیکل 370 کو ختم کر کے مقبوضہ وادی میں مکمل طور پر لاک ڈاؤن اور کرفیو لگا دیا جس کو پانچ اگست کو ہی ایک سال مکمل ہو جائے گا۔ بھارت کے اس بدترین لاک ڈاؤن کے بعد کشمیریوں کو بنیادی حقوق سے محروم کر دیا گیا۔

اب چونکہ بھارت کا یہ بدترین کرفیو دوسرے سال میں داخل ہونے جا رہا ہے اس لیے اس مسئلے پر روشنی ڈالنے کے لیے امریکہ کے شہر نیو یارک میں تاریخی ٹائمز سکوائر کے مقام پر غیر قانونی طور پر قید کیے گئے 80 لاکھ کشمیریوں سے اظہار یکجہتی کے لیے بل بورڈ پر پیغامات آویزاں کیے گئے۔

امریکہ میں پاکستان کے سفیر اسد مجید نے اپنے ٹوئٹر اکاؤنٹ سے ٹائمز سکوائر پر دکھائے جانے والے ان پیغامات کی ویڈیو شیئر کی جس میں دیکھا جا سکتا ہے کہ بل بورڈز پرLetKashmirSpeak# اور OneyearSeige# لکھا گیا ہے۔

دراصل گزشتہ سال جب سے کشمیر میں یہ کرفیو نافذ کیا گیا ہے اس کے بعد سے لے کر اب تک کشمیریوں کے لیے یہ جبری تشدد، گمشدگیوں اور محاصرے کا سال ہے۔ جہاں کوویڈ19 کے نام پر کرفیو میں مزید سختی کر کے کشمیریوں کو تشدد اور ظلم کا نشانہ بنایا جاتا ہے۔


ای پیپر