روسی صدر کی مخالفت پر خاتون صحافی کی خود کشی
03 اکتوبر 2020 (21:24) 2020-10-03

ماسکو: روس کی خاتون صحافی نے وزارت داخلہ کے سامنے خود کو آگ لگا کر خود کشی کر لی ۔ اس نے موت سے پہلے اپنی خود کشی کا ذمہ دار روسی حکومت کو قرار دیا تھا۔

تفصیلات کے مطابق روس کی روشیا انڈی پینڈنٹ سائٹ کی ایڈیٹر ایرینا سلاوینا نے پولیس ہیڈ کوارٹر کے سامنے خودکو آگ لگاکر خود کشی کر لی۔ 

روس کی خاتون صحافی نے سوشل میڈیا پر پیغام چھوڑا کہ ’’ میں آپ سے کہتی ہوںمیری موت کا سارا ذمہ روسی حکومت پر ڈالنا‘‘۔

سلاوینا کی ویب سائٹ روسی صدر ولادیمر پیوٹن کیخلاف لکھنے کی وجہ سے مشہور تھی اور وہ کھل کر اپوزیشن رہنمائوں کا موقف پوسٹ کیا کرتی تھی۔ صحافی کے دوستوں کا الزام ہے سلاوینا کو روسی حکومت کی طرف سے مسلسل دبائو کا سامنا کرنا پڑا رہا تھا اور اسی دبائو کے سامنے ہار کر سلاوینا نے خود کشی کی ہے اور یہ اس بات کا ثبوت ہے کہ روس میں آزادی صحافت کے کیا حالات ہیں۔ 

یاد رہے کہ خود کشی نے ایک  دن پہلے روسی پولیس نے سلاوینا کے گھر پر چھاپہ مارا تھا اور اس کا لیپ ٹاپ اور فون قبضے میں لے لیا تھا۔ اپوزیشن کا بھی ماننا ہے کہ سلاوینا کو روسی صدر کی مخالفت کرنے پر دبائو کا سامنا تھا۔ 


ای پیپر