Fake voters, electronic voting machines, Babar Awan, PTI government, PML-N
03 May 2021 (14:44) 2021-05-03

اسلام آباد: رہنما تحریک انصاف بابر اعوان نے کہا کہ اوپن بیلٹ سے سینیٹ الیکشن کرانے کیلئے ترمیم لا رہے ہیں ، جعلی ووٹ والوں کو الیکٹرانک ووٹنگ مشین سے سب سے زیادہ خطرہ ہے ۔

پریس کانفرنس کرتے ہوئے بابر اعوان نے کہا کہ قومی اسمبلی اجلاس میں ن لیگ کے پارلیمانی اراکین کا رویہ غیر پارلیمانی رہا ہے ۔ کیا اپوزیشن نے پچھلے سال اکتوبر سے اب تک الیکشن سے متعلق کوئی تجویز دی ہے؟ انہوں نے کہا کہ جتنے بھی سوالات اٹھانے ہیں اٹھائیں ، حکومت جوابات سے نہیں گھبراتی ۔ پارلیمنٹ صرف ہماری نہیں بلکہ اپوزیشن کی بھی ہے ۔

پی ٹی آئی کے رہنما نے کہا کہ شہباز شریف نے کہا پارلیمنٹ میں 3 سال سے تالا لگا دیا گیا ۔ اپوزیشن لیڈر کو دعوت دیتے ہیں وہ پبلک اکاؤنٹ کمیٹی کے اجلاس میں شرکت کریں ، شہباز شریف بتائیں وہ چیئرمین پبلک اکاؤنٹ کمیٹی بنے انہوں نے کتنے اجلاس میں شرکت کی ۔

بابر اعوان نے کہا کہ ترامیم میں کوئی ایسی چیز نہیں جو ایک جماعت کے مفاد میں ہو ، حلقہ بندیاں رجسٹرڈ ووٹرز کی تعداد کے مطابق کریں گے ۔ چاروں صوبوں سمیت گلگت بلتستان اور آزاد کشمیر میں علیحدہ الیکشن کمیشن ہیں ۔

انہوں نے کہا کہ سیاسی جماعتوں کیلئے 213 اے کا نیا سیکشن متعارف کرا رہے ہیں جبکہ اوورسیز پاکستانیوں کے ووٹ کیلئے سیکشن 94 میں ترمیم لا رہے ہیں ۔ سیاسی جماعتوں کے اندر جمہوریت کیلئے 2 ریفارمز تجویز کی ہیں ۔

رہنما تحریک انصاف نے کہا کہ الیکشن کے 15 دن میں پولنگ اسٹاف کی تعیناتی چیلنج کی جاسکے گی ، جو پولنگ آفیسر یا اسٹاف لگایا جائے گا اسے چیلنج کیا جاسکے گا ۔ آئینی اداروں پر عدم اعتماد کا بحران پیدا ہوگیا ہے ۔ الیکشن ایکٹ 2017 میں 49 تبدیلیاں کی جا رہی ہیں ۔

انہوں نے کہا کہ ای وی ایم کے استعمال کیلئے سیکشن 103 میں ترمیم کر رہے ہیں ، یہ سسٹم پی ٹی آئی نے نہیں پاکستان کے ماہرین نے بنائے ہیں ۔ ہم انہیں بلائیں گے اور سسٹم دکھائیں گے ۔


ای پیپر