کلبھوشن کیس میں اسلام آباد ہائیکورٹ کا حکم نامہ
03 دسمبر 2020 (17:39) 2020-12-03

 اسلام آباد:ہائیکورٹ نے کہا ہے کہ بھارتی جاسوس کلبھوشن یادیو کے کیس میں عالمی عدالت انصاف اور پاکستانی قوانین پر عمل کرنا لازمی ہے۔ اگر بھارتی حکومت کو کوئی اعتراض ہے تو وہ اپنے وکیل کے ذریعے ہمیں آگاہ کرے۔

اسلام آباد ہائیکورٹ نے بھارتی جاسوس کلبھوشن یادیو کے کیس کی سماعت کے بعد ایک تحریری حکم نامہ جاری کیا ہے جس میں بھارت کو کہا گیا ہے کہ کسی بھی اعتراض کی صورت میں وہ اپنے وکیل کے ذریعے رابطہ کرے۔ ہم بھارتی جاسوس کے کیس میں فیئر ٹرائل چاہنے ہیں جس پر بھارتی ہائی کمیشن کے نمائندے نے بتایا کو وکیل مقرر کرنے کے حوالے سے مشاورت  جاری ہے۔

اسلام آباد ہائیکورٹ کے تحریری حکم نامے کے مطابق اٹارنی جنرل کی طرف سے یہ اعتراض بالکل درست ہے کہ بھارتی ہائی کمیشن کے حکام کو مزید دلائل دینے کی اجازت نہیں دی سکتی  لیکن بھارتی جاسوس کے کیس میں پاکستان قانون اور عالمی عدالت انصاف کے فیصلے پر عملدرآمد ہونا چاہیے۔ اس حوالے سے اگر بھارتی حکام کو کوئی اعتراض ہے تو انہیں چاہیے کہ وہ وکیل مقرر کریں اور اس کے ذریعے وہ اعتراض بتایا جائے۔


ای پیپر