افریقہ میں تین روسی صحافیوں کو قتل کر دیا گیا
03 اگست 2018 (14:48) 2018-08-03

ماسکو:جمہوریہ وسطی افریقہ میں روس سے تعلق رکھنے والی نیم فوجی دستے کی تحقیقات کرنے والے3روسی صحافیوں کو قتل کریاگیا ہے اور روسی حکام کے مطابق ان صحافیوں کو حملے میں ہلاک کیاگیا ہے۔


تفصیلات کے مطابق تینوں صحافی خفیہ روسی نجی فوجی ملیشیا کمپنی ویگنر کی سرگرمیوں کی تحقیقات کیلیے ایک تحقیقاتی فریضے کی ادائیگی کیلیے جمھوریہ وسطی افریقہ میں تھے۔ویگنر تنظیم نے اپنے فوجی دستے شام اور یوکرین میں تعینات کیے ہوئے ہیں۔ امریکی وزارت خزانہ نے مشرقی یوکرین میں علیحدگی پسندوں سے لڑنے کیلیے فوجیوں کی بھرتی کیلیے اس ملیشیاکی مالی امداد کی منظوری دی تھی۔ جبکہ اس ملیشیاکے درجنوں ٹھیکیدار رواں برس فروری میں امریکی افواج اور اس کے اتحادیوں کے ساتھ لڑائی میں مارے اور زخمی ہوگئے تھے۔ روسی وزارت خارجہ کے مطابق صحافیوں کی لاشوں کے ساتھ ملنے والی دستاویزات سے ہلاک ہونے والے صحافیوں کی شناخت اورہان ڈیزھمیل، الیگزینڈر راستورگوئیف اور کیریل رادچینکوکے ناموں سے ہوئی ہے۔


ان صحافیوں کو جمہوریہ وسطی افریقہ کے دارالحکومت بین گل سے 185میل دور واقع شہرسیبت میں ہلاک کیاگیا۔ شہرکے میئرنے بتایا مسلح افراد نے صحافیوں کے گاڑی پر فائرنگ کردی جس سے تینوں ہلاک ہوگئے تاہم ان کا ڈرائیور حملے میں محفوظ رہا۔ روسی وزارت خارجہ کے مطابق افریقی ملک میں روسی صحافیوں کی ملک میں موجودگی کا سفارتخانے کو بدقسمی سے علم میں نہیں لایا گیاتھا۔ تاہم روسی سفارتخانے روسی صحافیوں کی ہلاکت کے تمام تر واقعات کے جاننے کیلیے مقامی قانون نافذکرنے والے اداروں سے رابطے میں ہیں۔ جبکہ روسی قانون نافذکرنے والے اداروں نے بھی ہلاکتوں کی تحقیقات شروع کردی ہے۔روس ان نیم فوجی دستوں پر انحصار کرتاہے تاہم انھیں باقاعدہ طورپر یوکرین اور شام میں متحارب علاقوں میں ان کی موجودگی کو تسلیم نہیں کرتاہے


ای پیپر