US space company, NASA, helicopter mission, Mars, Ingenuity Ms helicopter
02 May 2021 (09:08) 2021-05-02

نیو یارک: امریکی خلائی کمپنی ناسا نے مریخ پر بھیجے گئے ہیلی کاپٹر کے مشن میں توسیع کا اعلان کر دیا ۔

چار آزمائشی پروازوں میں توقعات سے بڑھ کر کارکردگی کے بعد ناسا نے مریخ پر بھیجے گئے ہیلی کاپٹر ’انجینیوئٹی‘ کے مشن کی مدت بڑھا دی ہے ۔ ابتدائی طور پر اس ہیلی کاپٹر کے لیے تیس روز کا مشن رکھا گیا تھا ۔ شمسی توانائی سے اڑنے والا یہ چھوٹا ہیلی کاپٹر گزشتہ روز چوتھی مرتبہ قریب دو منٹ تک اڑایا گیا ۔

خیال رہے کہ کسی دوسرے سیارے پر جانے والی پہلی کنٹرولڈ پرواز کے ساتھ امریکی خلائی ادارہ ناسا نے تاریخ رقم کردی ہے، خبر رساں ادارے اے ایف پی کے مطابق چار پاؤنڈ یا تقریباً دو کلوگرام کا یہ ڈرون 18 فروری کو مریخ تک جا چکا تھا ۔ ماہرین کا کہنا ہے کہ مریخ پر یہ جدید ترین ڈرون طرز کا ہیلی کاپٹر بھیجنے کا مقصد یہ پتا لگانا تھا کہ آیا مریخ پر کوئی زندگی پائی جاتی ہے یا نہیں ، اس کے برعکس انجنیوٹی مارس ہیلی کاپٹر کا مقصد اپنی تکنیکی صلاحیت دکھانا ہے ۔

امید کی جارہی ہے کہ انجنیوٹی مستقبل میں اجرامِ فلکی کی مزید تلاش کو بہتر بنائے گا ۔ یہ اس لیے کہ انجنیوٹی ہیلی کاپٹر کی رفتار تیز ہے اور وہ وہاں تک جا سکتا ہے جہاں کوئی اور ٹیکنالوجی نہیں پہنچ سکتی ۔

ماہرین کے مطابق اس پرواز میں مشکلات تھی کیونکہ مریخ پر ہوا کی کمی کی وجہ سے ڈرون ہیلی کاپٹر کی پرواز متاثر ہو سکتی ہے ، ہوا میں کمی کے باعث ہیلی کاپٹر کو اُڑان میں رکھنا مشکل ہو سکتا ہے ۔

ماہرین کا کہنا ہے انجنیوٹی کو اس طرح بنایا گیا ہے کہ وہ اڑتے ہوئے تصاویر لے سکتا ہے ۔ اس کی مدد سے اس فلائٹ میں مریخ کی تصاویر بھی لی جائیں گی ۔


ای پیپر