ملکی قرضوں میں 1514 ملین روپے کا اضافہ
02 May 2019 (18:02) 2019-05-02

اسلام آباد: قومی اسمبلی کو حکومت نے آگاہ کیا ہے کہ اگست 2018 سے جنوری 2019 کے دوران ملکی قرضوں میں 1514 ملین روپے جبکہ غیر ملکی سرکاری قرضوں میں 635 ملین ڈالرز کا خالص اضافہ ہوا،اسٹیل مل کی نجکاری کا کوئی ارادہ نہیں ہے اسے نجکاری کی فہرست سے نکال دیا گیا ہے۔

 قومی اسمبلی میں رکن اسمبلی شیخ روحیل اصغر کے سوال کے تحریری جواب میں وزارت خزانہ نے ایوان کو بتایا کہ اگست 2018 سے جنوری 2019 کے دوران ملکی قرضوں میں خالص اضافہ 1514 ملین روپے رہا جبکہ اسی عرصے کے دوران غیر ملکی سرکاری قرضوں میں 635 ملین ڈالرز کا خالص اضافہ رجسٹرڈ کیا گیا۔

وزیر مملکت برائے پارلیمانی امور علی محمد خان نے ایوان کو بتایا کہ اسٹیل مل کی نجکاری کا کوئی ارادہ نہیں ہے اسے نجکاری کی فہرست سے نکال دیا گیا ہے ،دو آر ایل ان جی پاور پلانٹس،2 بینکوں ،جناح کنونشن سنٹر ،سروسز انٹرنیشنل ہوٹل ،لاکھڑاکول پلانٹ کی نجکاری کی جائے گی ،حکومت کو اسٹیل مل پر بحث کرانے پر کوئی اعتراض نہیں ہے،2015 سے یہ مل بند ہے ،گزشتہ پانچ سالوں کے دوران نجکاری کمیشن نے کامیابی سے پانچ نجکاری کے معاملات کیئے ہیں جن سے 172 بلین روپے آمدنی ہوئی۔

وزیر داخلہ اعجاز احمد نے ایوان کو بتایا کہ اسلام آباد سیف سٹی پروجیکٹ کے تحت 1944 کیمرے نصب کیئے گئے ہیں جو کہ جون 2016 سے فعال ہیں ،فعال کیمروں کی کل تعداد 1841 ہے تاہم تعمیراتی کاموں کی وجہ سے باقی 103 کیمرے اکھاڑ دیئے گئے ہیں۔


ای پیپر